تازہ ترین خبریںدلی نامہ

پی ایم مودی جی! پلیز کم ٹو شاہین باغ

نفرتوں کے درمیان شاہین باغ کے مظاہرین کا وزیر اعظم کا انتظار

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
سی اے اے، این آر سی اور این پی آر کے خلاف شاہین باغ میں دو ماہ سے خواتین کا پر امن دھرنا جاری ہے۔ جس میں ہر مذہب اور ہر عمر کی خواتین آئین کی حفاظت کیلئے گھر بار چھوڑ دھرنے پر موجود ہیں۔ شاہین باغ کی خاتون مظاہرین کو بد نام کرنے اور ان کو یہاں سے ہٹانے کی بھلے ہی لاکھ کوششیں اور سازشیں کی گئی ہوں لیکن بلند حوصلوں کے ساتھ آئین کے حفاظت کیلئے خواتین مسلسل دھرنے پر بیٹھی ہیں۔

شاہین باغ کے دھرنے کے خلاف نفرتیں پھیلانے کی سازشوں کے باوجود شاہین باغ میں آج محبت کا دن ویلن ٹائن ڈے منایا گیا۔ مظاہرین نے ہاتھوں میں دل نما کارڈ اٹھائے ہوئے تھے، الگ الگ الفاظ کو جوڑیں تو ان پر ’پی ایم مودی جی! پلیز کم ٹو شاہین باغ‘ لکھا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم مودی جی کو یہاں بلا کر نفرتوں کا جواب محبت سے دینا چاہتے ہیں تاکہ وہ اس ملک سے سی اے اے، این آر سی اور این پی آر کو ختم کر سکیں۔ شاہین باغ کی خاتون مظاہرین کا کہنا ہے کہ ہندوستان مختلف مذاہب، تہذیب اور ثقافت کا ملک ہے، جس میں ہر مذاہب کے لوگ محبت اور اخوت کے ساتھ رہتے ہیں۔ ہمارئے ملک کا آئین بھی کہتا ہے کہ یہ ملک سیکولر ملک ہے اور اس میں مذہب کی بنیاد پر کوئی قانون نہیں بنا یاسکتا۔ لیکن یہ سی اے اے، این آر سی اور این پی آر لا کر مرکزی حکومت ملک کو مذہب کے نام پر عوام کو تقسیم کرنا چاہتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم اپنے آئین کا احترام کرتے ہیں اور اپنے ملک ہندوستان سے محبت کرتے ہیں، ہم کسی ایسے قانون کو کبھی تسلیم نہیں کریں گے جو ملک کے آئین کے مخالف ہو۔ اسی لئے آج محبت کے دن وزیر اعظم نریندر مودی کو یہاں شاہین باغ آنے کی دعوت دی گئی تھی۔

دنیا بھر میں 14 فروری کو منائے جانے والے ویلنٹائن ڈے پر وزیر اعظم نریندر مودی کو محبت کا پیغام دینے کیلئے شاہین باغ میں آکر ویلن ٹائن ڈے منانے کی دعوت دی تھی۔ مظاہرین نے کہا کہ وہ پی ایم مودی کو ایک خاص تحفہ بھی دیں گے اور ان کیلئے اسپیشل لو سانگ‘ بھی ریلیز کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا دعوی ہے کہ سی اے اے سے کسی کی بھی شہریت ختم نہیں ہوگی لیکن یہ کوئی نہیں بتا رہا ہے کہ اس سے ملک کو کیا فائدہ ہو گا، سی اے اے سے غربت، بیروزگاری اور معاشی سست روی سے لڑنے میں کس طرح مدد ملے گی۔ شاہین باغ میں مسلسل دو ماہ سے دھرنے پر بیٹھی خواتین کی حمایت میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے وابستہ افراد پہنچ رہے ہیں۔ ان کی حمایت میں سکھ مرد و خواتین کے جتھے پہنچے ہیں۔

ملک بچانے بچانے کے لئے گھروں سے نکلیں ان ماؤں بہنوں کے درمیان آج بالی ووڈ کے معروف فلم ساز انوراگ کشیپ بھی پہنچے۔ کشیپ نے کہاکہ یہ مائیں بہنیں ملک اور پوری دنیا کیلئے علامت ہیں کہ اپنا حق پر امن طریقے سے حاصل کرو۔ کشیپ نے کہاکہ یہ لڑائی جس کیلئے ملک بھر کے عوام آج سڑکوں پر ہیں کوئی معمولی لڑائی نہیں ہے اور نہ ہی چھوٹی لڑائی ہے، یہ لڑائی لمبی ہے جسے ہم سب کو مل کر لڑنا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close