تازہ ترین خبریںدلی نامہ

پیاز کی قیمتوں میں اضافہ کیلئے مرکزی اور دہلی حکومت ذمہ دار: ہارون یوسف

وزیر اعلی کجریوال کی رہائش پر کانگریس منائے گی ’چھلاوا دوس‘، ہزاروں صفائی ملازمین ہوں گے شریک

نئی دہلی(انور حسین جعفری)
دہلی پردیش کانگریس کمیٹی نے دہلی میں پیاز کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کا ذمہ دار مرکزی بی جے پی حکومت اور دہلی کی کجریوال حکومت کو بتا یا ہے۔ ساتھ ہی وزیر اعلی کجریوال کی جانب سے دہلی والوں سے کئے وعدے پو رے نہ کئے جا نے کے خلاف 26ستمبر کو ’چھلاوا دوس‘ مناتے ہوئے وزیر اعلی کجریوال کی رہائش پر احتجاج کرنے کا بھی اعلان کیا ہے جس میں ہزاروں صفائی ملازمین بھی شامل ہو ں گے۔یہ معلومات آج دہلی کانگریس کے دفتر میں منعقدہ پریس کا نفرنس میں دہلی پردیش کانگریس کمیٹی کے کا رگزار صدرہارون یوسف،دویندر یادو اور راجیش للوٹھیا نے الزام لگایا کہ پیاز کی قیمتوں میں بے تحاشہ بڑھوتتری اورکمی کیلئے دونوں حکومتیں ذمہ دار ہیں انہی کی بے حسی اور عدم تو جہی کے سبب یہ حالات پیدا ہو ئے ہیں۔

آج ریاستی دفتر راجیو بھون میں منعقد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ہارون یوسف نے کہاکہ وزیر اعلی کجریوال اگلے 10دنوں میں پیاز کی کمی دور کر نے کا اعلان کر کے دہلی والوں کو بیوقوف بنا رہے ہیں۔جبکہ لی والوں کو مہنگی پیاز اور سبزیاں خریدنی پڑ رہی ہیں۔ پیاز کے دام 70سے80 روپے تک پہنچ گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی اور عام آدمی پارٹی پیاز کی کمی ہونے کے مسئلے پر لوگوں کو بیوقوف بنانا بند کریں۔

سابق وزیر خوراک ورسد ہارون یو سف نے کہاکہ 10 دن میں پیاز گجرات اور راجستھان سے دہلی آنا شروع ہو جائے گی،جس سے پیاز کی قیمت خود بخود کم ہو جائے گی،انہوں نے بتایا کہ نوراترو میں پیاز کی کھپت تقریبا 60 فیصد کم ہو جاتی ہے، اس سے بھی پیاز کے داموں میں کی کمی آ جاتی ہے۔ہارون یوسف نے کہا کہ جب دہلی میں کانگریس کی شیلا دکشت حکومت تھی، تب پہلے ہی بات کو یقین کر لیا جاتا تھا کہ پیاز کی کمی دہلی کو نہ جھیلنی پڑے۔ انہوں نے کہا کہ پیاز کی فراہمی روایتی ذرائع سے جب کبھی بھی ملنی کم ہوتی تھی تو کانگریس حکومت 15 سال تک اقتدار کے دوران تمل ناڈو سے پیاز لاکر کھپت کو پورا کرتی تھی۔

ہارون یو سف نے دہلی کے وزیر اعلی اروند کجریوال پر الزام لگایا کہ اندھیرے والے علاقوں میں دہلی حکومت کی طرف سے 2 لاکھ سٹریٹ لائٹ لگانے سے خواتین کے تحفظ بڑھے گا والا بیان چونکانے والا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کیجریوال نے یہ مان لیا ہے کہ خواتین کے تحفظ کے معاملے میں گزشتہ ساڑھے چار سالوں سے انہوں نے نوٹس نہیں لیا اور خواتین پر بہت اٹیک ہوئے۔ایسے ہی کجریوال کا 1000 ڈی ٹی سی بسوں کو روڑ پر لانا بھی دہلی کے ساتھ ایک مذاق ہے جسے گزشتہ پانچ سال سے کیا جا رہا ہے۔

راجیش للوٹھیا نے کہا کہ کانگریس کارکن عام آدمی پارٹی کی طرف سے جھوٹے وعدوں اور دہلی کے کئے گئے وعدوں کو پورا نہ کرنے کے خلاف کل 26 ستمبر کو چھلاوا دن کی حیثیت سے کجریوال کی رہائش گاہ پر احتجاجی مظاہرہ کریں گے جبکہ وزیر کجریوال صفائی ملازمین کو نئے وعدے کرنے کیلئے ’ادھیکار دوس‘کے نام پر انہیں بیوقوف بنانے کے لئے نئے اعلان کریں گے۔مسٹر للوٹھیا نے کہا کہ صفائی ملازمین کی کئی یونینوں نے کانگریس قیادت سے کہا کہ وہ کجریوال کے جھوٹے وعدوں میں اب نہیں آئیں گے اور وہ مشترکہ طور پر کجریوال کے خلاف ان کی رہائش گاہ پر ’چھلاوا دوس‘ میں کانگریس کے احتجاج میں حصہ لیں گے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close