اپنا دیشتازہ ترین خبریں

پیاز کی برآمدات پر روک، ذخیرہ کرنے کی حد متعین

مرکزی حکومت نے گھریلو بازار میں پیاز کی دستیابی بڑھانے اور اسکی قیمت کوکنٹرول کرنے کے لیے برآمدات پر پابندی لگانے کے ساتھ ہی کاربوباریوں کے لیے ذخیرہ کرنے کی حد طے کردی ہے اور ریاستوں کو جمع خوری روکنے کے لیے سخت قدم اٹھانے کو کہا ہے۔

حکومت نے پیاز کی برآمدات فوری طور پر روکنے کے لیے آج ہی نوٹیفکیشن جاری کردیا اور خردہ کاروباریوں کے لیے 100کنٹل اور تھوک کاروباریوں کے لیے 500 کوئنٹل پیاز ذخیرہ کرنے کی حد مقرر کردی ہے۔ یہ حد پورے ملک میں نافذہوگی۔ مرکز نے ریاستی حکومتوں سے پیاز کی ذخیرے کی حد کو سختی سے نافذ کرنے کو کہا ہے۔ حکومت نے ربیع کے دوران نیفیڈ کے ذریعہ تقریبا 56700 ٹن کا ذخیرہ کیا تھا۔ اس کے تعاون سے دہلی میں تقریبا 24 روپئے فی کلوگرام کی شرح سے پیاز عام لوگوں کو فروخت کی جا رہی ہے۔ اسی ذخیرہ سے ہریانہ اور آندھرا پردیش کو بھی پیاز بھیجی گئی ہے۔

دیگر ریاسی حکومتوں کو بھی پیاز کی قیمتوں پر کنٹرول کے لیے اسکا استعمال کرنے کو کہا گیا ہے۔ نوٹیفیکشن کے بعد بنگلہ دیش اور سری لنکا کو پیاز کی برآمدات فورا بند ہو جائیگی۔ حکومت نے کہا ہے کہ اسکی خلاف ورزی کرنے والے کاروباریوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائیگی۔ اطلاع ملی تھی کہ کچھ کاروباری ان دونوں ملکوں کو کم ازکم برآمداتی قیمت سے بھی کم قیمت پر پیاز بھیج رہے تھے۔ واضح رہے کہ حالیہ دنوں میں ملک کے کئی حصوں میں پیاز کی خردہ قیمت 60 روپئے فی کلوگرام تک پہنچ گئی تھی۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close