دلی این سی آر

پیاز دینے سے انکار پر عمران حسین نے مرکزی وزیر کو لکھا مکتوب

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی میں پیاز کی بڑھتی ہو ئی قیمتوں کے باوجود مرکزی حکومت کی جانب سے پیاز دینے سے انکار کر نے پر دہلی کے وزیر خوراک و رسد عممران حسین نے مرکزی وزیر خواراک و رسد رام ولاس پاسوان کو ایک مکتوب ارسال کر کیان کی توجہ مبذول کرا ئی ہے۔

دہلی کے وزیر خوراک ورسد عمران حسین نے لکھا ہے کہ اس خط کے ذریعہ، میں آپ کی توجہ دہلی میں فروخت کرنے کیلئے ہندوستان کی قومی زرعی کوآپریٹو مارکیٹنگ فیڈریشن (نافیڈ) کے ذریعہ پیاز کی فراہمی کے معاملے کی طرف مبذول کرنا چاہتا ہوں۔ نافیڈ یہ پیاز مرکزی اسٹور سے دہلی حکومت کو فراہم کررہا ہے۔ دہلی حکومت نے ستمبر 2019 کے بعد سے دہلی میں نافیڈ کے ذریعہ فراہم کی جانے والی پیاز کی خوردہ فروخت پرکی زمہ داری لی ہوئی ہے۔ ایسا پیاز کے صحیح دام اور سپلائی کیلئے ککیا گیا ہے۔

اب تک نافیڈپرائس اسٹیبلائزیشن فنڈ (پی ایس ایف)کے تحت دہلی حکومت کو پیاز 15 روپے 60 پیسے فی کلو کے حساب سے سپلائی کی جارہی تھی، جو دہلی حکومت23 روپے90 پیسے کلو میں دہلی کے عوام کو مہیا کرا رہی تھی۔یہ پیاز کی بڑھتی قیمتوں سے لوگوں کو ریلیف دینے کے لئے کیا جارہا تھا۔عمران حسین نے لکھا کہ دہلی حکومت نے عوام کو آسانی سے اور مناسب قیمتوں پر پیاز کی فراہمی کیلئے انتظامات کئے ہیں۔ اس کیلئے موبائل گاڑیوں اور لوگوں کا مکمل انتظام ہے۔ اس کے علاوہ دہلی اسٹیٹ سول سپلائی کارپوریشن (ڈی ایس سی ایس سی) اور محکمہ فوڈ اینڈ سپلائی کے ملازمین بھی پیاز کی تقسیم میں مصروف ہیں۔ اس طرح کے نظام کے باوجودحال ہی میں ہوئی ریویو میٹنگ میں نافیڈ کے ذریعہ بتایا گیا ہے کہ پرائس اسٹیبلائزیشن فنڈ کے تحت فراہم کی جانے والی پیاز کی فراہمی بند کردی گئی ہے۔ یہ مرکزی حکومت کے کہنے پر کیا گیا ہے۔

نافیڈ نے یہ بھی بتایا کہ وہ الور کے بازار سے دہلی حکومت کو پیاز مہیا کرسکتے ہیں اور اس کے بعد مصر سے درآمد پیاز کی کھیپ بھی دہلی کو فراہم کی جائے گی۔ تاہم یہ پیاز موجودہ خریداری کی شرح پر دی جائے گی اور اس پر نقل و حمل کی قیمت بھی ادا کرنا پڑے گی۔ اس کے علاوہ حکومت ہند کے صارفین امور کے محکمہ کے سکریٹرنے بھی 23 نومبر 2019 کو لکھے گئے خط میں کہا ہے کہ پیاز یہاں پہنچنے کے پانچ دن بعد دہلی میں 60 روپے فی کلوگرام کی قیمت پر دستیاب ہوگی۔

انہوں نے لکھا کہ یہ ایک بہت زیادہ ریٹ ہیں اگر اس ریٹ پر پیازسپلائی کئے گئے تو یہ دہلی کے لوگوں کی پہنچ سے باہر ہو گا۔عمران حسین نے کہاکہ میں آپ سے عاجزی کے ساتھ گزارش کرتا ہوں کہ مرکزی حکومت کی جانب سے اس مہنگے ریٹ کی پیازفراہم کرا نا دہلی میں پیاز کی سپلائی کو متاثر کرے گی۔ اب تک دہلی کے عوام سرکاری فروخت مراکز پر سب سیڈی سے پیاز خرید رہے تھے، لیکن اتنی زیادہ قیمتوں پر پیاز عوام کی جیب سے باہر ہے۔

حکومت کو اس طرح کی روز مرہ کی چیزوں کو مہنگے ریٹ پر بیچ کر منافع کمانے کی منشہ نہیں رکھنی چا ہئے۔لہذااس ایشو کا جائزہ لے کر حکومت ہند کو پی ایس ایف کودوبارہ شروع کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے لکھا کہ اس کے علاوہ نافیڈ کو مفاد عامہ میں ایک بار پھر پیاز 15 روپے 60 پیسے فی کلو کے حساب سے سپلائی کرنے کی ہدایت کی جائے۔ تاکہ دہلی کے عوام اسے 23 روپے 90 پیسے کی قیمت پر آسانی سے خرید سکیں۔

عمران حسین نے کہاکہ اس لئے میں آپ سے گزارش کرتا ہوں کہ آپ اس معاملے میں ذاتی طور پر مداخلت کریں اور نافیڈ کو ہدایت کریں کہ وہ مفاد عامہ میں پہلے کی طرح15.60 پیسے فی کلوگرام کے حساب سے دہلی کو پیاز کی سپلائی جاری رکھیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close