اپنا دیشتازہ ترین خبریں

’پڑھو اور بڑھو‘ بیداری مہم کے تحت 60 اقلیتی طبقے والے بڑے اضلاع میں چلائی جائے بیداری مہم

مولانا آزاد ایجوکیشن فاؤنڈیشن کی گورننگ باڈی اور جنرل باڈی کی میٹنگ میں مرکزی وزیر مختار عباس نقوی کا خطاب

نئی دہلی(انور حسین جعفری)
وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی مرکزی حکومت کی وزارت اقلیتی امور 3 ای پروگرام، ایجوکیشن، امپلائمنٹ اور امپارومنٹ پر کام کرے گی۔ جس کیلئے لائحہ عمل تیار کیا جا رہا ہے۔ مرکزی حکومت کی دوبارہ تشکیل کے بعد اقلیتوں کی تعلیمی اور سماجی ترقی و فلاح و بہبود کیلئے کام کر رہے مولانا آزاد ایجوکیشن فاؤنڈیشن کی 112 ویں گورننگ باڈی اور 65 ویں جنرل باڈی کی میٹنگ آج انتودیہ بھون میں مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی کی صدارت میں منعقد ہوئی۔

مرکزی وزارت اقلیتی امور کے تحت کام کر رہے مولانا آزاد ایجوکیشن فاؤنڈیشن کی گورننگ باڈی اور جنرل باڈی کی میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے مرکزی اقلیتی وزیر مختار عباس نقوی نے کہا کہ ایک بار پھر وزیراعظم نریندر مودی کی مرکزی حکومت ترقی کی صحت کو فرقہ واریت اور خوش آمدی کی بیماری سے نجات دلا کر صحت مند جامع طور پر با اختیاری بنانے کا ماحول تیار کر رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی سرکار انصاف، ایمان اور اقبال کی حکومت ہے۔ جامع اور سب کی ترقی کیلئے پابند عہد ہے۔

مختار عباس نقوی نے کہا کہ اقلیتی طبقہ کی اسکول ڈراپ آؤٹ لڑکیوں کو ملک کے مشہور تعلیمی اداروں کے زریعہ برج کورس کرا کے انہیں تعلیم اور روز گار سے جوڑا جائے گا۔ ملک بھر کے مدرسوں میں مین اسٹریم کی تعلیم کو یقینی بنانے کیلئے مدرسہ اساتذہ کو مختلف تعلیمی اداروں سے تربیت دلائی جائے گی تاکہ وہ مدرسوں میں مین اسٹریم میں ہندی، انگریزی، ریاضی (حساب)، سائنس اور کمپیوٹر وغیرہ کی تعلیمی دے سکیں۔ یہ کام اگلے مہینے سے شروع کردیا جائے گا۔ وزیر موصوف نے کہاکہ مرکزی وزارت اقلیتی امور 3-ای پروگرام ایجوکیشن امپلائمنٹ اور امپاور منٹ پر کا م کر رہی ہے۔ تعلیم، روز گار کے مواقع اور سماجی و قتصادی ترقی پروگرام کے تحت اگلے پانچ برسوں میں پری میٹرک، پوسٹ میٹرک اور میرٹ کم مینس وغیرہ منصوبوں کے ذریعہ 5 کروڑ طلبا کو اسکالر شپ دی جائے گی۔ جس میں 50 فیصد سے زیادہ لڑکیوں کو شامل کیا جائے گا۔ ان میں اقتصادی طور پر پسماندہ لڑکیوں کے لئے دس لاکھ سے زائد بیگم حضرت محل اسکالرشپ شامل ہیں۔

مختار عباس نقوی نے کہا کہ جن علاقوں میں تعلیمی اداروں کے لئے مناسب ڈھانچہ کے تحت سہولیات نہیں ہیں وہاں ’پردھان منتری جن وکاس کار یہ کرم‘ (پی ایم جے وی کے) کے تحت تقریباً 8ہزار کروڑ روپے کی لاگت سے پالی ٹیکنک، آئی ٹی آئی، گرلز ہوسٹل، اسکول، کالج، گروکل ٹائپ بورڈنگ ودیالیہ، کامن سروس سینٹر وغیرہ جنگی سطح پر تعمیر ہوں گے۔ مختار عباس نقوی نے کہا کہ مرکزی اقلیتی وزارت کے پڑھو اور بڑھو بیداری مہم کے تحت ان سبھی دور دراز علاقوں میں جہاں سماجی اور اقتصادی طور سے پسماندگی ہے اور لوگ اپنے بچوں کو تعلیمی اداروں میں نہیں بھیج پا رہے ہیں، ان والدین کی، بچوں کو تعلیمی اداروں میں بھیجنے سے متعلق بیداری اور حوصلہ افزائی کی جائے گی۔ اس میں خاص طور سے لڑکیوں کی تعلیم پر توجہ دی جائے گی۔ ساتھ ہی تعلیمی اداروں کو سہولت اور ذرائع مہیا کرانے کے لئے موثر ڈھنگ سے کام کیا جائے گا۔ اس مہم کے تحت نکڑ ناٹکوں، چھوٹی فلموں وغیرہ جیسے ثقافتی پروگراموں کے ذریعہ بیداری اور حوصلہ افزائی کیلئے مہم چلائی جائے گی اسی سلسلے میں پہلے مرحلے میں ملک بھر کے 60 اقلیتی طبقے والے بڑے اضلاع کا انتخاب کرکے اس مہم کو شروع کیا جائے گا۔

مختار عباس نقوی نے کہاکہ اس کے علاوہ اقتصادی طور پر کمزور اقلیتوں مسلمانوں، عیسائیوں، سکھ، جینوں، بودھوں اور پارسی نوجوانوں کیلئے مرکز اور ریاستوں کی سول سروسیز، بینکنگ، ایمپلائیز سیلیکٹ کمیشن، ریلوے اور دیگر مقابلہ جاتی امتحانات سے متعلق تیاری میں مفت کوچنگ کا انتظام کیا جائے گا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close