بہار- جھارکھنڈتازہ ترین خبریں

پٹنہ: RLSP کے کارکنوں پر لاٹھی چارج، اوپیندر کشواہا سمیت کئی کارکنان زخمی

بہار کی تعلیمی نظام کو بہتر بنانے کے سلسلے میں قومی لوک سمتا پارٹی کی طرف سے راجدھانی پٹنہ میں راج بھون مارچ کا انعقاد کیا گیا تھا. جس میں پارٹی کے قومی صدر اوپیندر کشواہا اپنے حامیوں کے ساتھ گاندھی میدان کے قریب جے پی گولمبر سے راج بھون کی جانب آگے بڑھے. جس کے بعد پٹنہ پولیس نے ڈاک بنگلہ چوراہے کے قریب کارکنوں اور لیڈروں کو آگے بڑھنے سے روکنے کی کوشش کی اور اسی دوران پولیس اور کارکنوں کے درمیان جھڑپ ہو گئی. جس کے بعد پولیس نے کارکنوں پر لاٹھی چارج کر دیا. واٹر کینن کا بھی استعمال کیا گیا. جھڑپ کے دوران کئی کارکن زخمی بھی ہوگئے. اس دوران پارٹی صدر اوپیندر کشواہا کی طبیعت بھی بگڑ گئی. انہیں علاج کے لئے پی ایم سی ایچ اسپتال بھیجا گیا ہے. پارٹی صدر نے کہا کہ نتیش کمار نے میرے اوپر لاٹھی چلوایا ہے.

لاٹھی چارج کے واقعہ کے بعد پارٹی صدر اوپیندر کشواہا نے کہا کہ "نتیش کمار نے ہمارے لوگوں پر لاٹھی چلوايا ہے. مجھے بھی چوٹ آئی ہے. اسی طرح سے ہمارے کئی ساتھیوں کو لاٹھی لگی ہے. "مودی حکومت کے سابق وزیر کشواہا نے آگے کہا کہ بہار میں تعلیمی نظام کو مسلسل برباد کیا جا رہا ہے. ریاست کے تعلیمی نظام کو بہتر بنانے کے لئے حکومت کو ہمارے تمام مطالبات کو ماننا ہوگا اور یہ مارچ بہار کے تعلیمی نظام کو بہتر بنانے کے لئے نکالا گیا ہے. ہماری پارٹی مسلسل گزشتہ دو سالوں سے اس مسئلے پر آواز اٹھاتی رہی ہے اور ہماری یہ تحریک آگے بھی جاری رہے گی.

بہار میں یہ تحریک کے تحت پٹنہ میں جے. پی. گولبر سے راج بھون تک مارچ کا انعقاد کیا گیا تھا. مارچ کے آغاز میں ہی انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ "بہار میں تعلیمی نظام کو بہتر بنانے کا عزم کیا ہے، بہار کے نونہالوں کے مستقبل کی تعمیر کے لئے ہم تعلیم کو بہتر کریں گے اور کرکے ہی رہیں گے.” لیکن جب یہ مارچ ڈاک بنگلہ چوراہے پر پہنچی تو یہاں پولیس نے اوپیندر کشواہا اور ان کے حامیوں کو روکنے کی کوشش کی.

ایسا بتایا جا رہا ہے کہ اوپیندر کشواہا کے حامی آگے جانے کی ضد پر اڑ گئے اور اسی بات کو لیکر ان پولیس کے ساتھ جھڑپ ہوگئی. پولیس کی طرف سے لاٹھی چارج کئے جانے کے بعد کارکنوں کی طرف سے بھی لاٹھیاں چلائی گئی. جس کے بعد پولیس نے بھیڑ کو منتشر کرنے کے لئے واٹر کینن کا استعمال کیا. لاٹھی چارج کے بعد کشواہا ڈاک بنگلہ چوراہے پر ہی بیٹھ گئے اور یہاں ان کی طبیعت بھی بگڑ گئی. جس کے بعد ایمبولینس کے ذریعے ان کو پی ایم سی ایچ اسپتال بھیجا گیا.

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close