اپنا دیشتازہ ترین خبریں

پلوامہ میں مذہبی یگانگت کی اعلیٰ مثال، قدیم مندر کی مرمت میں مسلمان مصروف

پلوامہ خوکش دھماکے کے بعد پیدا شدہ پُر آشوب حالات کے بیچ کشمیری مسلمانوں نے جنوبی کشمیر کے پلوامہ ضلع کے ہی اچھن علاقے میں قائم ایک 80 سالہ قدیم شیو مندر کی تعمیر نو کا کام شروع کرکے مذہبی یگانگی کی ایک اور درخشان مثال قائم کی ہے۔ ادھر سابق وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے اس احسن اقدام پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ یہی کشمیریت کی علامت ہے۔

اچھن پلوامہ کے مقامی لوگوں کی آرزو ہے کہ وہ وقت پھر آجائے جب یہاں بہ یک وقت مسجد کے میناروں سے اذان اور شیو مندر سے گھنٹیوں کی آوازیں فضا میں گونجتی تھیں۔ مقامی لوگ، مسلم اوقاف کمیٹی کی سربراہی میں، اور گاؤں میں رہائش پذیر واحد پنڈت کنبے کے افراد اسی سالہ پرانے شیو مندرکی مرمت وتجدید کاری میں مصروف عمل ہیں۔ پلوامہ کے لیتہ پورہ میں 14 فروری کو سی آر پی ایف کا نوائے پر ہوئے خود کش حملے کے بعد بیرون ریاست کشمیریوں پر ہوئے حملوں کے پیش نظر مندر کا مرمتی کام کچھ دنوں کے لئے معطل رہا تاہم مقامی لوگوں نے پیر کے روز پنڈتوں کے اہم ترین تہوار ہیرتھ کے موقعہ پر مندر کا مرمتی کام دوبارہ شروع ہوا۔
http://sachkiawaz.com/wp-content/uploads/2019/03/2.jpg
ایک مقامی پنڈت سنجیو کمار نے کہا کہ ہم نے مقامی اوقاف کمیٹی سے شیو مندر کی تعمیر نو کے لئے مدد طلب کی تو وہ فوراً ہمیں مدد کرنے پر تیار ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ اچھن میں ہم لوگ امن اور مذہبی بھائی چارے کے ساتھ زندگی گزر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مندر کا مرمتی کام مکمل ہوتے ہی مورتی کو پوجا کے لئے نصب کیا جائے گا۔ ایک مقامی مسلم محمد یوسف نے کہا کہ ہم امید کرتے ہیں کہ وہ وقت بہت جلد آئے گا جب یہاں مسجد سے اذان کی آواز اور مندر سے گھنٹیوں کی آواز ایک ساتھ فضا میں گونجے گی۔ مہا شیو راتری جو ہیرتھ کے نام سے بھی مشہور ہے کے موقعہ پر جب مندر کا مرمتی کام دوبارہ شروع ہوا تو مندر میں لوگوں کی تواضع قہوہ سے کی گئی۔
http://sachkiawaz.com/wp-content/uploads/2019/03/3.jpg

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close