اپنا دیشتازہ ترین خبریں

پلوامہ: مسلح تصادم میں 5سیکورٹی فورس اہلکار، 3جنگجو اور ایک عام شہری ہلاک

جنوبی کشمیر کے ضلع پلوامہ کے پنگلن میں پیر کے روز سیکورٹی فورسز اور جنگجوﺅں کے درمیان قریب 18 گھنٹوں تک جاری رہنے والا مسلح تصادم ایک میجر اور جموں و کشمیر پولیس کے ہیڈ کانسٹیبل سمیت 5 سیکورٹی فورس اہلکاروں، تین جنگجوﺅں اور ایک عام شہری کی ہلاکت پر ختم ہو گیا۔

مسلح تصادم کے دوران ڈی آئی جی جنوبی کشمیر، ایک آرمی بریگیڈیئر، ایک لیفٹیننٹ کرنل، ایک میجر اور ایک کیپٹن سمیت 8 سیکورٹی فورس اہلکار زخمی ہو گئے۔ مہلوک فوجیوں کی شناخت میجر وبھوتی شنکر ڈونڈیال، حوالدار شیورام، سپاہی ہری سنگھ، سپاہی اجے کمار اور پولیس ہیڈ کانسٹیبل عبدالرشید کے طور پر ہوئی ہے۔ ریاستی پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ مہلوک جنگجوﺅں کی شناخت اور وابستگی معلوم کی جا رہی ہے۔

مسلح تصادم کے دوران ڈی آئی جی جنوبی کشمیر امت کمار گولی لگنے سے زخمی ہوئے۔ ان کے علاوہ ایک آرمی بریگیڈیئر، ایک لیفٹیننٹ کرنل، ایک میجر اور ایک کیپٹن سمیت 7 فوجی اہلکار زخمی ہوگئے ہیں۔ زخمیوں کو مختلف اسپتالوں میں داخل کرایا گیا ہے۔ تصادم کے دوران ابتدائی فائرنگ میں ایک عام شہری بھی جاں بحق ہوا۔ مذکورہ عام شہری کی شناخت 46 سالہ مشتاق احمد بٹ کے طور پر ہوئی ہے۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق مسلح تصادم کے حاشیہ پر مقامی لوگوں اور سیکورٹی فورسز کے درمیان معمولی نوعیت کی جھڑپیں بھی ہوئیں۔ تاہم معمول کے برخلاف آس پاس کے بیشتر دیہات میں لوگ اپنے گھروں تک ہی محدود رہے۔ انتظامیہ نے احتیاطی طور پر جنوبی کشمیر کے سبھی چار اضلاع پلوامہ، اننت ناگ، شوپیاں اور کولگام میں موبائیل انٹرنیٹ خدمات منقطع رکھی ہیں۔ جبکہ وسطی کشمیر کے سری نگر اور بڈگام اضلاع میں تیز رفتار والی فور جی اور تھری جی خدمات معطل رکھی گئی ہیں۔

سرکاری ذرائع نے تفصیلات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ فوج کی 55 راشٹریہ رائفلز (آر آر)، سینٹرل ریزرو پولیس فورس اور جموں وکشمیر پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ نے پلوامہ کے پنگلن میں جنگجوﺅں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر مذکورہ علاقہ میں گذشتہ رات دیر گئے کارڈن اینڈ سرچ آپریشن شروع کیا۔ انہوں نے بتایا کہ مشتبہ جگہ کی جانب پیش قدمی کے دوران وہاں موجود جنگجوﺅں نے سیکورٹی فورسز کو نشانہ بناکر اندھا دھند فائرنگ کی، جس کے نتیجے میں ایک میجر سمیت چار فوجی اہلکار جاں بحق ہوئے۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ اس کے بعد طرفین کے درمیان باضابطہ طور پر مسلح تصادم شروع ہوا اور کئی گھنٹوں تک جاری رہنے والے اس مسلح تصادم میں تین جنگجو مارے گئے۔ انہوں نے بتایا کہ مسلح تصادم کے مقام سے بھاری مقدار میں اسلحہ و گولہ بارود اور دیگر قابل اعتراض مواد برآمد کیا گیا ہے۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close