تازہ ترین خبریںدلی نامہ

پرانی سڑکوں کو توڑ کر ہی بنائی جائیں گی نئی سڑکیں

کجریوال نے کہا پہلے بھی تھی یہ ٹیکنالوجی لیکن بدعنوانی کیلئے نہیں کر رہے تھے استعمال

نئی دہلی(انور حسین جعفری)
دہی کو ترقی یافتہ بنانے کو کوشاں عام آدمی پارٹی کی دہلی حکومت کی جانب سے دہلی بھر میں سڑکوں کی تعمیر کے کام کئے جا رہے ہیں۔ اسی کے تحت رٹھالا اسمبلی علاقہ کے روہنی سیکٹر 5، 6،11 16، 17 کے تحت آنے والی 9، 13، 24 اور 30 میٹر سڑکوں کی تعمیر کا کام کے آغاز کا افتتاح آج وزیر اعلی اروند کجریوال کے ہاتھوں عمل میں آیا۔اس موقع پر ان کے ساتھ پی ڈبلیو ڈی وزیر ستیندر جین بھی بطور خاص مو جود تھے۔

اس موقع پر جم غفیر سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلی اروند کجریوال نے کہاکہ دہلی میں اب سڑکوں کی از سر نو تعمیر میں نئی ٹیکنالوجی کا استعمال ہو گا۔ جس کے تحت سڑک نئی تعمیر کیلئے اب پرانی سڑک کو تو ڑنا پڑے گا۔ اس سے نکلنے والے میڑریل استعمال نئی سڑک کی تعمیر میں کیا جا ئے گا۔ اس سے سڑکوں کی تعمیر کے اخراجات میں 30فیصد کی کمی آئے گی۔ وزیر اعلی اروند کجریوال نے کہاکہ یہ ٹیکنالوجی پہلے بھی تھی، لیکن بدعنوانی کرنے کیلئے اس کااستعمال نہیں کیا جا تا تھا۔لیکن اب اس نئی ٹیکنالوجی سے سڑک کی تعمیر کے بعد لوگوں کے گھر نیچے ہونے اور سڑک اوپر ہونے کے مسئلے سے بھی نجات مل جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ مجھے انتہائی خوشی ہے آپ کی اتنی سڑکیں ایک ساتھ بن رہی ہیں۔ جو کئی سال سے بنی ہی نہیں تھیں جس سے لوگوں کو تکلیف ہوتی تھی، لیکن اب13 کلو میٹر سڑک کو پانچ ماہ میں بنا دیا جائے گا۔ وزیر اعلی نے کہاکہ ہماری کوشش ہوگی کہ مقررہ وقت سے سڑکیں ایک دن پہلے بن جائیں۔انہوں نے کہا کہ ہم نے خواتین کیلئے سفر مفت کر دیاہے جس سے دہلی کی خواتین خوش ہیں، دنیا میں کسی نے ایسا سوچا بھی نہیں ہو گا۔حالانکہ اپوزیشن پارٹیوں نے خوب ہنگامہ کیا، لوگ پوچھتے ہیں پیسہ کہاں سے آتا ہے؟تو ہم بتا تے ہیں کہ ایک ریاست کے وزیر اعلی نے 191 کروڑ کا جہاز اپنے لئے خریدا، میں نے اپنے لئے جہاز نہیں خریدا بلکہ اپنی بہنوں کا سفر مفت کیا۔ اگر میں اپنے لئے جہاز خریدتا تو اپوزیشن کو تکلیف نہیں ہوتی لیکن دہلی کی خواتین کیلئے بسوں میں سفر کر دیا تو ان کا پریشانی ہے کیوں کہ دوسرے ریاستوں میں بھی مطا لبہ کیا جا رہا ہے، اسلئے اپوزیشن ہم سے ناراض ہے۔

وزیر اعلی نے کہاکہ ہم نے دو سو یونٹ بجلی مفت کر دی ہے اب زیرو بل آ رہیں۔ اپوزیشن لیڈر اس کی بھی مخالفت کر رہے ہیں۔جو لیڈر فری بجلی کی مخالفت کر رہے ان کے لیڈران کو چار ہزار یونٹ بجلی مفت مل رہی۔ لیکن اگر غریب ڈرائیور کو مل گئی تو تکلیف ہو رہی ہے، عوام کو مفت بجلی ملنے پر انہیں تکلیف ہے۔سی ایم نے کہا دہلی میں ڈینگو آپ کی کوششوں سے کم ہوا،اس سال گزشتہ ہفتے تک صرف 13 سو کیس آئے اور کوئی موت نہیں ہوئی۔ دس ہفتے، دس بجے، دس منٹ مہم سے دہلی نے کمال کیاہے جو اب ہر سال کریں گے۔

دہی کی آلودگی پر وزیر اعلی اروند کجریوال نے کہاکہ ہم نے آلودگی کم کیاہے۔ 9 اکتوبر تک دہلی کا آسمان اور ہوا صاف تھی۔ 2015 کے مقابلے ہماری آلودگی 25 فیصد کم ہوئی ہے۔ صرف پنجاب اور ہریانہ میں پرالی جلانے سے آلودگی میں اضافہ ہوا ہے۔ دو دن سے پرالی جلنا کم ہوئی تو ہوا صاف ہوئی ہے۔پہلے چھ لاکھ سے زیادہ جنریٹر چلتے تھے لیکن اب 24 گھنٹے بجلی آتی ہے جنریٹر ہٹادئے گئے اس سے بھی آلودگی کم ہوئی ہے۔ کجریوال نے کہا دہلی نے ترقی کی رفتار پکڑی ہے اسے رکنے نہیں دیں گے۔ہمیں پانی سپلائی سے موٹر ہٹانا ہے، صاف پانی گھر گھر پہنچے گا، اس کے لئے پلان بن گیا ہے۔چار پانچ سال میں گھر گھر پانی جائے گا۔ لندن، پیرس میں بھی لوگ ٹوٹی سے پانی پیتے ہیں۔

وزیر اعلی نے کہا کہ میری طاقت آپ لوگ ہیں۔ اپوزیشن میری جتنا مخالفت کرتی ہے، مجھے کوئی اثر نہیں ہوتا۔جب تک آپ کی محبت ہے، مجھے کسی چیز کی پرواہ نہیں ہے۔ میرا خواب ہے کہ جیتے جی دہلی کو دنیا کا نمبر ایک شہر دیکھنا چاہتا ہوں۔ اس موقع پر دہلی حکومت کے وزیر ستیندر جین نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ ستیندر جین نے کہا کہ دنیا میں آج تک اتنے کام نہیں ہوئے، جتنے پانچ سال میں دہلی میں ہوئے ہیں۔ اس دوران ممبر اسمبلی مہندر گوئل اورچیف انجینئر متھرا پرسادنے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا۔

انہوں نے بتایا کہ 50 کروڑ کی لاگت سے تعمیر کا کام ہو گا۔ 10 کروڑ سے 19 سڑکیں بنیں گی۔ جن لمبائی 13 کلومیٹر ہے جبکہ 40 کروڑ سے وزیر اعلی سڑک تعمیر کی منصوبہ بندی کی جانب سے سڑکیں بنیں گی۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close