آئینۂ عالمتازہ ترین خبریں

ٹی ایف ٹی سی کے رکن ممالک نے 9افراد کو عالمی دہشت گرد قرار دیا

امریکہ، سعودی عرب اور 5 دیگر خلیجی ریاستوں نے طالبان رہنماؤں سمیت 9 افراد کو عالمی دہشت گرد قرار دیتے ہوئے ان پر پابندی عائد کردی۔ ساتھ ہی یہ دعویٰ کیا گیا کہ یہ افراد ایران کے ساتھ مل کر افغان حکومت کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کے لیے کام کر رہے تھے۔

دہشت گرد قرار دیئے گئے ان افراد میں 2 پاکستانی اور 4 افغان طالبان بھی شامل ہیں، جنہیں’ ٹیررسٹ فنانسنگ ٹارگیٹنگ سینٹر‘ (ٹی ایف ٹی سی) کی تمام 7 رکن ریاستوں کی جانب سے عالمی دہشت گرد قرار دیا گیا ہے۔ خیال رہے کہ ‘ٹی ایف ٹی سی’ میں امریکہ، سعودی عرب، بحرین، کویت، عمان، قطر اور متحدہ عرب امارات (یو اے ای) شامل ہیں، جو مئی 2017 میں قائم کیا گیا تھا۔اس حوالہ سے واشنگٹن میں امریکی محکمہ خزانہ کا کہنا تھا کہ یہ اقدام حکومتوں کو ان کے دائرہ کار کے تحت ان افراد کی جائیدادوں یا جائیدادوں میں کی گئی سرمایہ کاری کو منجمد کرنے کی اجازت دے گا۔انہوں نے کہا کہ ہدف بنائے گئے افراد میں کچھ ’ایران کی حمایت ‘ سے طالبان کو سہارا دے رہے تھے جبکہ دیگر’ ایرانی حکومت کے اسپانسر‘ تھے۔

امریکی محکمہ خزانہ کے سیکریٹری اسٹیون منوچن کا کہنا تھا کہ ’’ٹی ایف ٹی سی رکاوٹ ہے اور وہ خودکش دھماکوں اور دیگر مہلک سرگرمیوں میں ملوث طالبان کے اہم رہنماؤں کو سامنے لارہی ہے‘‘۔ ان کا کہنا تھا کہ ’’ہم طالبان کو مالی اور مادی امراد فراہم کرنے والے کلیدی ایرانی اسپانسرز کو بھی ہدف بنا رہے ہیں‘‘۔ امریکی بیان میں کہا گیا کہ یہ پابندیاں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جنوبی ایشیائی حکمت عملی کی حمایت کرتی ہیں۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close