آئینۂ عالمتازہ ترین خبریں

ٹرمپ کے ’دیوار‘ بنانے کے منصوبہ پر جج نے لگائی عارضی روک

امریکہ میں ایک وفاقی جج نے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے قومی ہنگامی اعلان کے تحت جنوبی سرحد پر اربوں ڈالر خرچ کر کے دیوار بنانے کے منصوبہ پر عارضی روک لگا دی ہے۔ امریکہ کے شمالی ضلع کیلی فورنیا کے وفاقی جج هيووڈ ایس گليم جونیئر نے یہ روک لگائی ہے۔

ٹرمپ نے امریکہ اور میکسیکو کی سرحد پر دیوار بنانے کی یقین دہانی بہت پہلے کرائی تھی۔ اس دیوار سے دراندازی، منشیات کی اسمگلنگ پر روک لگائی جا سکے گی اور یہ ٹرمپ کی انتخابی مہم کا بنیادی ایشو تھا۔ صدر اس دیوار کی تعمیر کے لئے فنڈز اکٹھے کرنے کے لئے مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں کیونکہ کانگریس نے اس کے لئے مسٹر ٹرمپ کے اربوں ڈالر کی رقم مختص کرنے پر زور انداز میں ٹھکرا دیا ہے۔ مسٹر ٹرمپ نے کانگریس کو درکنار کرکے ضروری فنڈز اکٹھے کرنے کے لئے نیشنل ڈیزاسٹر کا اعلان کیا۔

پولٹیكو کی جانب سے جاری رپورٹ میں جج گليم نے اپنے حکم میں کہا’’جب کانگریس نے حکومت کی رقم مختص کرنے کی درخواست کو مسترد کر دی اس کے باوجود اس حکومت نے ’کانگریس کے بغیر‘ رقم جمع کرنے کا راستہ نکالا جو طاقتوں کی علیحدگی کے بنیادی اصولوں کے مطابق نہیں ہے‘‘۔ یہ حکم اس منصوبے کے لئے وزارت دفاع کو ایک ارب ڈالر کی رقم فراہم کرنے پر روک لگاتا ہے اور دیگر 1.5 ارب ڈالر کے استعمال پر سوال اٹھاتا ہے. اگرچہ یہ افسران کو دیگر ذرائع سے فنڈز حاصل کرنے سے نہیں روکتا ہے۔

رپورٹ میں جج کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ حکام نے دیوار بنانے کے لئے فنڈز کا استعمال ہفتے کے روز سے ہی شروع کرنے کا منصوبہ بنایا تھا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close