تازہ ترین خبریںکھیل کھلاڑی

ویسٹ انڈیز کے دورے میں دھونی کا ریکارڈ توڑ سکتے ہیں وراٹ

ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی ویسٹ انڈیز کے دورے میں سابق کپتان مہندر سنگھ دھونی کا ریکارڈ توڑ سکتے ہیں۔

وراٹ کوہلی کی کپتانی میں ہندوستانی ٹیم 3 ٹوئنٹی -20، تین ون ڈے اور 2 ٹیسٹ کھیلنے پیر کو امریکہ اور ویسٹ انڈیز کے دورے پر روانہ ہوگی۔ وراٹ ٹیم کے روانہ ہونے سے پہلے ممبئی میں شام 6 بجے پریس کانفرنس کو بھی خطاب کریں گے۔ ہندستان کا ویسٹ انڈیز دورہ تین اگست سے تین ستمبر تک رہے گا۔ ہندوستان کے ویسٹ انڈیز میں دو ٹیسٹ آئی سی سی ٹیسٹ چمپئن شپ کا بھی حصہ ہوں گے جس میں میچ کے نتائج کے مطابق پوائنٹس ملے گا۔ ان دو ٹسٹ میچوں میں وراٹ کے پاس دھونی سے آگے نکلنے کا موقع رہے گا۔

دھونی اب تک ہندوستان کے سب سے زیادہ کامیاب ٹیسٹ کپتان ہیں۔ دھونی نے اپنی کپتانی میں 60 ٹسٹ میچوں میں 27 جیتے ہیں، 18 ہارے ہیں اور 15 ڈرا رہے ہیں۔ وراٹ نے اپنی کپتانی میں 46 ٹسٹ میچوں میں 26 جیتے ہیں، 10 ہارے ہیں اور 10 ڈرا کھیلے ہیں۔ اس دورے میں دو ٹیسٹ جیتنے کی پوزیشن میں دھونی کو پیچھے چھوڑ کر ہندوستان کے سب سے زیادہ کامیاب کپتان بن سکتے ہیں۔

ویسٹ انڈیز کے خلاف تین میچوں کی ون ڈے سیریز میں وراٹ کے پاس سب سے زیادہ میچوں میں کپتانی کرنے کے معاملے میں راہل دراوڑ سے آگے نکلنے کا موقع رہے گا جس کے بعد وہ اس ترتیب میں چوتھے نمبر پر آ جائیں گے۔ دراوڑ نے 79 میچوں میں ہندستان کی کپتانی کی تھی جبکہ 77 میچوں میں ہندوستان کی کپتانی کر چکے وراٹ ون ڈے سیریز کے بعد 80 میچ کے ساتھ دراوڑ سے آگے نکل جائیں گے۔ ون ڈے میچوں میں دھونی نے 200، محمد اظہر الدین نے 174 اور سوربھ گنگولی نے 146 میچوں میں ہندوستان کی کپتانی کی ہے۔

وراٹ نے حال میں ختم ہوئے ورلڈ کپ میں کپل دیو (74 میچوں میں کپتانی) اور سچن تندولکر (73 میچوں میں کپتانی) کو پیچھے چھوڑا تھا اور ویسٹ انڈیز کے دورے میں وہ دراوڑ سے آگے نکل جائیں گے۔ دو ٹسٹ میچوں کی سیریز میں وراٹ کے پاس کرنل نام سے مشہور دليپ وینگسرکر کو بھی پیچھے چھوڑنے کا مکمل موقع رہے گا۔ وینگسرکر نے 116 ٹسٹ میچوں میں 6868 رن بنائے ہیں جبکہ وراٹ نے 77 ٹسٹ میچوں میں 6613 رن بنائے ہیں۔ دونوں کے درمیان 255 رنز کا فاصلہ ہے اور اگر وراٹ اس فاصلے کو پورا کر دیتے ہیں تو وہ ہندوستان میں سب سے زیادہ رن بنانے کے معاملے میں ساتویں نمبر پر پہنچ جائیں گے۔

ٹوئنٹی -20 میں ہندوستان کے دو سرفہرست بلے بازوں روہت شرما اور وراٹ کے درمیان ایک دوسرے سے آگے نکلنے کی دوڑ چلتی رہے گی۔ اس فارمیٹ میں روہت کے 94 میچوں سے 2331 رنز اور وراٹ کے 67 میچوں سے 2263 رنز ہیں۔ دونوں کے درمیان صرف 68 رنز کا فاصلہ ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close