اپنا دیشتازہ ترین خبریں

’وکرم‘ سے رابطہ ٹوٹنے کی وجوہات کا جائزہ لے رہی ہے کمیٹی: اسرو

انڈین اسپیس ریسرچ آرگنائیزیشن (اسرو) نے جمعرات کو بتایا کہ قومی سطح کی ایک کمیٹی چندریان۔2کے لینڈر ’وکرم‘ سے رابطہ ٹوٹنے کی وجوہات کا جائزہ لے رہی ہے۔ اسرو نے ایک ٹویٹ میں یہ اطلاع دی۔ اس نے بتایا کہ اس کمیٹی میں ملک کے معروف ماہرینِ تعلیم اور اسرو کے ماہرین شامل ہیں۔

22 جولائی 2019 کو آندھراپردیش کے شری ہریکوٹا میں واقع دھون اسپیس سینٹر سے چندریان۔2 کو لانچ کیا گیا تھا۔ چندیان۔2 کے لینڈر ’وکرم‘ کو 07 ستمبر کو علیٰ الصباح چاند کی سطح پر اتر جانا تھا اور چاند کی سطح سے 2.1 کلو میٹر کی دوری تک سب کچھ ٹھیک رہا لیکن اس کے بعد لینڈر کا رابطہ مشن کنٹرول بورڈ سے ٹوٹ گیا۔ لینڈر چاند کی سطح پر جا گرا جس کی تصدیق اسرو نے کر دی ہے۔ تمام کوششوں کے باوجود اس سے دوبارہ رابطہ قائم نہیں کیا جا سکا۔

اسرو نے یہ بھی بتایا کہ چندریان۔2 کا آربیٹر سائنس سے تعلق رکھنے والے ان تمام تجربات کو قابل اطمینان ڈھنگ سے انجام دے رہا ہے جو پہلے سے طے منصوبے کے حساب سے اسے کرنے ہیں۔ آربیٹر کے تمام پے۔لوڈ یعنی سائنسی آلات کو انرجی ملنی شروع ہوگئی ہے اور ان کا شروعاتی ٹرائل کامیابی سے مکمل کیا گیا۔ اسرو نے بتایاکہ آربیٹر کے تمام پے لوڈ کا مظاہرہ ٹرائل میں قابل اطمینان پایا گیا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close