تازہ ترین خبریںدلی این سی آر

وبال جان بنی فضائی آلودگی، 40 فیصد لوگ چھوڑنا چاہتے ہیں دہلی این سی آر

دہلی این سی آر میں آلودگی خطرناک سطح پر پہنچ گئی ہے۔ کئی علاقوں میں ہوا کا معیار انڈیکس (اے کیو آئی)1200 سے تجاوز کر چکا ہے۔ بڑھتی آلودگی کو لے کر سیاسی پارٹیاں ایک دوسرے پر الزام لگا رہی ہیں، لیکن ان سب کے درمیان سب سے زیادہ پریشانی عام لوگوں کو ہو رہی ہے۔ آلودگی کی وجہ قومی دارالحکومت میں سانس لینا مشکل ہو گیا ہے۔ آلودگی کی وجہ لوگ اب دہلی سے دور جانا چاہتے ہیں۔ ایک سروے کے مطابق، دہلی اور این سی آرکے 40 فیصد لوگ شہر کو چھوڑنا چاہتے ہیں۔

سروے دہلی، نوئیڈا، گروگرام، غازی آباد اور فرید آباد میں کیا گیا ہے۔ اس میں 17000 لوگوں کی رائے لی گئی۔ دہلی قومی دارالحکومت خطہ کے باشندوں سے پوچھا گیاکہ مرکزی اور ریاستی حکومتوں نے آلودگی کے خلاف گزشتہ 3 سالوں میں جس طرح سے اسکیمیں چلائی، کیا وہ کافی ہیں۔ حیرانی کی بات یہ ہے کہ 40 فیصدی لوگوں نے کہا کہ وہ قومی راجدھانی دہلی اور این سی آر کو چھوڑ کر کہیں اور جانا چاہتے ہیں۔

31 فیصد نے کہاکہ وہ ایئر پیوری فائر، ماسک، پودوں کے ساتھ دہلی این سی آر میں رہیں گے، جبکہ 16 فیصد نے کہاکہ وہ دہلی این سی آر میں رہیں گے۔زہریلی آلودگی کے اس دور میں وہ سفر بھی کریں گے۔ وہیں 13 فیصد نے کہا کہ وہ یہاں رہیں گے اور بڑھتی ہوئی آلودگی کی سطح سے نمٹنے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں ہے۔

گزشتہ سال کے سروے میں، دہلی -این سی آر کے 35 فیصد باشندوں نے کہا تھاکہ وہ علاقے میں بڑھتی ہوئی آلودگی کے اثرات سے خود کو اور اپنے خاندان کے اراکین کو بچانے کے لئے اپنے شہر کو چھوڑنا چاہتے ہیں۔ گزشتہ سال کے مقابلے سے پتہ چلتا ہے کہ دہلی این سی آر کے باشندوں کو آلودگی کی وجہ شہر چھوڑنے کا فیصد ایک سال میں 35 فیصد سے بڑھ کر 40 فیصد ہو گیا۔

لوگ ٹیکس ادا کرتے ہیں اور کم از کم امید کرتے ہیں کہ حکومت صاف ہوا، پینے کا صاف پانی اور گڈھوں سے پاک سڑکیں فراہم کرے گی۔ لوگوں نے بتایاکہ کس طرح ان کے خاندان کے کچھ ارکان نے پھیپھڑوں، گلے کے کینسر سمیت سنگین بیماریوں کے حالات کا تجربہ کرنا شروع کر دیا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close