اترپردیشتازہ ترین خبریں

وارانسی سے پی ایم مودی کے خلاف کھڑے تیج بہادر کی امیدواری منسوخ

بی ایس پی کے برخاست جوان و وارانسی سے سماج وادی پارٹی کے امیدوار تیج بہادر یادو کے پرچہ نامزدگی کو بدھ کو الیکشن افسرنے ان کو نوکری سے برخاست کئے جانے اور اس حوالے سے معقول جواب نہ دے پانے کے بموجب منسوخ کر دیا ہے۔ وہیں پرچہ نامزدگی خارج ہونے کے بعد میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے ایس پی امیدوار نے افسران کے اس فیصلے کو غلط قرار دیا ہے۔

یاد رہے کہ قانون کے مطابق اگر سرکاری نوکری سے کوئی بھی شخص بدعنوانی یا سرکشی کے الزام میں برخاست کیا جاتا ہے تو وہ برخاستگی کی تاریخ سے اگلے پانچ سالوں کے لئے کسی بھی الیکشن میں حصہ لینے کے لئے بھی ناہل قرار دیا جاتا ہے۔ تیج بہادر یادو کو بی ایس ایف سے 2017 میں برخاست کیا گیا تھا۔ تیج بہادر یادو نے کہا کہ مجھے کل 6:15 بجے اس ضمن میں سرٹیفیکٹ دینے کے لئے کہا گیا تھا میں نے اسے پیش بھی کیا باوجود اس کے میرے کاغذات کو خارج کردیا گیا۔ میں انتظامیہ کے اس فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرونگا۔

قابل ذکر ہے کہ ریٹرنگ آفیسر سریندر سنگھ نے منگل کو تیج بہادر یادو کو ایک نوٹس جاری کر کے پوچھا تھا کہ ان کو بی ایس ایف سے کس بنیاد پر برخواست کیاگیا۔ ملحوظ رہے کہ سماج وادی پارٹی نے نریندر مودی کے خلاف وارانسی سے تیج بہارد یادو کو اپنا امیدوار بنایا تھا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close