اترپردیش

نوگاوا سادات میں کورونا سے بزرگ عورت کی موت

نوگاوا سادات، (ندیم نقوی)

ظہور حسن کا کنبہ ضلع امروہہ کی تحصیل نوگاواں سادات نامی قصبے نئی بستی محلہ لاو جی میں رہتا ہے۔ جس میں سے 6 بیٹے ہیں نبی حسن فوت ہوگئے ہیں۔واضح ہو کہ زینب خاتون عمر 72 سال اہلیہ ظہور حسن نئی بستی محلہ لاو جی گلی، میں 2 ماہ سے بیمار تھی۔ اس کا کنبہ 32 افراد پر مشتمل ہے، جس میں چھ بیٹے بھی شامل ہیں۔ جس میں بڑے بیٹے نبی حسن گذشتہ سال دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کر گئے تھے۔

خاتون کے لواحقین راجستھان دہلی واگیرہ میں رہتے ہیں۔ سب کورونا وائرس کی وجہ سے بند ہونے کی وجہ سے گھر آگئے۔ نثار احمد کا کنبہ دہلی سے آیا تھا اور ارشاد کی بیٹی اقرا کوٹا اپنے کنبے کے ساتھ 18 اپریل کو راجستھان سے اپنے گھر آئی تھی۔ جب 26 اپریل کو زینب خاتون کو سانس لینے میں تکلیف ہوئی تو اہل خانہ نے اسے مراد آباد کے ٹی ایم یو اسپتال میں داخل کرایا، جہاں ڈاکٹروں نے نمونے بھیج کر کورونا علامات کی جانچ کی۔ بدھ کی رات جب یہ رپورٹ مثبت آئی تو بوڑھی عورت فوت ہوگئی۔ مثبت رپورٹ کی وجہ سے ڈاکٹروں میں ہلچل مچ گئی پولیس انتظامیہ میں ہلچل مچ گئی اور انتظامیہ نے نئی بستی کی نصف درجن گلیوں کو سیل کردیا اور ان گلی محلوں کو صاف ستھرا کردیا گیا۔ انتظامیہ اور ڈاکٹروں کی ٹیم نے کنبہ سے پوچھ گچھ کی اور انہیں موجودہ کورنٹائن سینٹر بھجوا دیا۔ انتظامیہ نے زینب خاتون کی لاش کونئی بستی کے قبرستان میں سپرد خاک کردیا۔

نوگاوا سادات میں کورونا سے ہونے والی پہلی ہلاکت نے پولیس انتظامیہ میں ہلچل مچا دی ہے۔ جس سے پورے قصبے اور آس پاس کے علاقوں میں خوف و ہراس پھیل رہا ہے۔ یہ قیاس کیا جارہا ہے کہ نوگاواں سادات میں کتنے کورونا مریض ہیں، یہ رپورٹ آنے کے بعد ہی پتہ چل سکے گا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close