اپنا دیشتازہ ترین خبریں

نوٹ بندی سے معیشت اور سماج میں ہوئی تباہی کا اثر سب کو دکھائی دے رہی ہے: منموہن سنگھ

سابق وزیراعظم منموہن سنگھ نے ’نوٹ بندی‘ کے دو سال پورے ہونے کے موقع پر مودی حکومت کی معاشی پالیسیوں پر حملہ کرتے ہوئے آج کہا کہ حکومت کو ہندوستانی معیشت میں شفافیت اور استحکام یقینی بنانی چاہئے۔

وزیراعظم نریندر مودی دو سال پہلے 8 نومبر کی رات میں آٹھ بجے ’نوٹ بندی‘کااعلان کرتے ہوئے اس وقت رائج 500 اور 1000 کے نوٹوں کو غیر قانونی قرار دیا تھا۔ مسٹر سنگھ نے ’نوٹ بندی‘ کو بدقسمتی اور بے سوچے سمجھے نفاذ کرنے والا منصوبہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے ہر شخص کی زندگی متاثر ہوئی، چاہے وہ کسی عمر، صنف، مذہب یا ذات پات یا کاروبار سے وابستہ ہو۔ انہوں نے حکومت کو آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ اسے ایسے اقدام نہیں کرنے چاہئیں جس سے معیشت اور مالیاتی بازار میں غیریقینی کی صورت حال پیدا ہوا۔

ڈاکٹر سنگھ نے کہا کہ ’’ٓ مودی حکومت کے ذریعہ سال 2016 میں کی گئی نوٹ بندی کے اعلان کے دو سال مکمل ہوگئے ہیں۔ اس سے ہندوستانی معیشت اور سماج میں جو تباہی مچی، وہ سب کو دکھائی دے رہی ہے۔ نوٹ بندی نے ہر شخص کو متاثر کیا۔ میں حکومت سے درخواست کرتا ہوں کہ معاشی پالیسیوں میں شفافیت اور استحکام قائم رکھیں۔ آج کا دن یہ یاد رکھنے کے لئے کس طرح غلط معاشی پالیسیوں کی وجہ سے پورا ملک لمبے عرصے تک متاثر ہوسکتا ہے۔ یہ دن یہ بھی سمجھاتا ہے کہ معاشی پالیسیاں اچھی طرح سے غوروفکر کے بعد ہی بنانی چاہئیں۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close