اپنا دیشتازہ ترین خبریں

میڈیا کی آزادی سلب کی گئی تو ملک زندہ نہیں رہے گا: فاروق عبداللہ

نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے الزام لگایا کہ ملک میں میڈیا پر زبردست دباؤ ہے اور حکمران جماعت بی جے پی میڈیا کو دبانے کی کوشش کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سچائی کو سامنے لانے کے لئے میڈیا ضروری ہے اور اگر میڈیا کی آزادی سلب کی گئی تو یہ ملک زندہ نہیں رہے گا۔

فاروق عبداللہ نے یہ باتیں اتوار کے روز یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر نوائے صبح کمپلیکس میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہیں۔ اس موقع پر پی ڈی پی ضلع صدر پلوامہ محمد خلیل بند نے نیشنل کانفرنس میں شمولیت اختیار کی۔

فاروق عبداللہ نے مودی حکومت پر میڈیا کو دبانے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا: ‘اللہ تعالی میڈیا پر رحم کرے۔ ان پر زبردست دبائو ہے۔ ان کو ڈکٹیٹ کیا جاتا ہے۔ اشتہارات سے محروم کیا جا رہا ہے۔ پورے ملک میں میڈیا کو اسی صورتحال کا سامنا ہے۔ آج ہندوستان کے نائب صدر جمہوریہ کہتے ہیں کہ میڈیا آزاد ہونا چاہیے۔ میں ان سے کہنا چاہتا ہوں کہ وہ اپنی جماعت سے یہ بات کہے جو میڈیا کو دبانے کی کوشش کررہی ہے۔ ہمیں سچائی جاننے کا حق ہے۔ سچائی کو سامنے لانے کے لئے میڈیا ضروری ہے۔ میڈیا آزاد ہونا چاہیے۔ میڈیا کی آزادی ملک کے لئے بہتر ہے۔ اگر میڈیا کو آزادی سے محروم کیا گیا تو یہ ملک باقی نہیں رہے گا’۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close