اترپردیشتازہ ترین خبریں

مٹی کی جانچ کے ٹینڈر میں کروڑوں کی گڑبڑی، نو افسران معطل

اترپردیش حکومت نے مٹی کی جانچ کی مہم کے تحت چار کمپنیوں کو غیر مناسب فائدہ پہنچانے کے الزام میں محکمہ زراعت کے نوافسران کو معطل کردیا ۔

ریاست کے وزیر زراعت سوریے پرکاش شاہی نے بدھ کو اپنی رہائش گاہ پر منعقد پریس کانفرنس میں بتایا کہ سال 18-2017 کےلئے مٹی کی جانچ کےلئے آؤٹ سورسنگ کے تحت پرائیویٹ کمپنیوں سے مٹی کی جانچ کرانے کےلئے ٹینڈر مدعو کئےگئے تھے۔ انہوں نے بتایا کہ محکمے کے افسران نے ٹینڈر کے عمل میں کچھ ایسی شرطیں شامل کیں جس سے کچھ خاص کمپنیوں کو ہی ٹینڈر مل سکے۔

انہوں نے بتایا کہ شکایت ملنے پر زرعی پیداوار کے کمشنر سے معاملے کی جانچ کرائی گئی۔ جانچ رپورٹ کے بعد اس معاملے سے منسلک نو افسران کو معطل کردیاگیا ہے۔ مسٹر شاہی نے بتایا کہ معطل افسران میں پانچ ڈیویژنوں کی ٹینڈر کمیٹی کے چیئرمین شامل ہیں۔ معطل افسران میں لکھنؤایگریکلچر ہیڈکوارٹر میں تعینات جوائنٹ ایگریکلچر ڈائیریکٹر(ریسرچ اینڈسوئل سروے)پنکج تریپاٹھی کے علاوہ بریلی ڈیویژن کے ٹینڈر کمیٹی کے چیئرمین اورڈپٹی ایگریکلچر ڈائیریکٹر ونود کمار، مراد آباد ڈیویژن کے چیئرمین اور ڈپٹی ڈائریکٹر ڈاکٹر اشوک کمار،علی گڑھ ڈیویژن کے چیئرمین اور جوائنٹ ڈائیریکٹر جوگیندر سنگھ راٹھور، سہارن پور ڈیویژن کے ٹینڈر کے چیئرمین اور ڈپٹی ڈائیریکٹر راجیو کمار، جھانسی ڈیویژن کے چیئرمین اور ڈپٹی ڈائیریکٹررات پرتاپ، میرٹھ ڈیویژن کے چیئرمین اور ڈپٹی ڈائیریکٹر سریش چندر چودھری، علی گڑھ میں تعینات ڈپٹی ڈائیریکٹر اور اسسٹنٹ انچارج ڈائیریکٹر (سوئل سروے اینڈ ایگریکلچر) دیو شرما اور بریلی میں تعینات اسسٹنٹ ڈائیریکٹر (سوئل سروے)سنجیو کمار شامل ہیں۔

انہوں نےبتایا کہ جانچ میں پتہ چلا ہے کہ ان افسران نے جن چار کمپنیوں کو ٹینڈر دلانے میں مدد کی ہے انہیں بلیک لسٹ کیا جارہا ہے۔ اس کے ساتھ ہی دو ڈیویژنوں میں کمپنیوں کو کی گئی ادائیگی کی وصولی بھی کرائی جائے گی۔ مسٹر شاہی نے بتایا کہ معطل افسران کے خلاف محکمہ جاتی جانچ بھی کرائی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ ملزم کمپنیوں نے تقریباً 50ہزار نمونوں کا غیر قانونی سرٹیفکیٹ بھی دیا۔ غیر قانونی سرٹیفکیٹ جاری کرنے پر ان کے خلاف ایف آئی آر بھی درج کرائی جائے گی۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close