اترپردیشتازہ ترین خبریں

مودی نے کسانوں کی بے عزتی کی، محض چنندہ سرمایہ کاروں کے لئے کام کیا: پرینکا گاندھی

کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا نے بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی) پر کسانوں کے بے عزتی کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ عوام سے دور ہوچکی مرکز کی نریندر مودی حکومت چنندہ سرمایہ کاروں کے فلاح میں مشغول ہے۔

محترمہ واڈرا نے اتوار کو بہرائچ کے نانپارہ میں ایک عوامی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی حکومت نے کسان سمان ندھی اسکیم کے تحت ہر سال 6 ہزار روپئے دیکر ان کی بے عزتی کی ہے۔ اسے’’ کسان اپمان یوجنا‘‘ کہا جائے تو بے جا نہ ہوگا۔ کانگریس نے اپنے انتخابی منشور میں کسانوں کو غریبی اور بدحالی سے باہر نکالنے کے لئے ان کا قرض معاف کرنے اور ہر سال 72 ہزار روپئے دینے کی پیشکش کی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ مودی حکومت نے اپنے میعاد کار کے دوران صرف خود کا اورا پنے چنندہ سرمایہ کار دوستوں کا ہی بھلا کیا ہے۔ اس کے برخلاف کانگریس کا نظریہ عوام کے مفادکا ہے۔ جب میں کسانوں سے ملتی ہوں تو وہ بتاتے ہیں کہ آوارہ مویشی کی وجہ سے رات بھر انہیں جاگنا پڑتا ہے۔ منریگا کے مزدوروں کو چھ چھ مہینے پیسے نہیں ملتے ۔ کانگریس کی حکومت آنے پر کسان کے لئے علیحدہ بجٹ بنایاجائےگا۔

کانگریس جنرل سکریٹری نے کہا کہ آج جو ادارے آپ کا تحفظ کرتے ہیں ان کو توڑا جارہا ہے۔ عوام پریشان اور دکھی ہیں۔ بی جے پی نے سچائی اور خدمت کی سیاست چھوڑ دی ہے۔ کانگریس کی حکومت آنے پر 12 ویں جماعت تک تعلیم مفت دی جائے گی۔ میری سمجھ سے سب سے بڑا نیشلزم یہی ہے کہ آپ عوام کے درمیان جائیں اور ان کے مسائل کو سنیں۔

انہوں نے ریلی میں موجود لوگوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ آپ کانگریس امیدوار ساوتری بائی پھولے کو کامیاب بنائیں گے تو بہرائچ کے مسائل حل ہوں گے۔ آنے والے وقت میں ہماری حکومت بنتی ہے تو سب سے پہلے اس حلقے میں جو سیلاب متاثرین ہیں ان کے لئے مناسب اقدام کئے جائیں گے اور زمینی طور پر اس کی لڑائی لڑی جائے گی۔محترمہ واڈرا نے کہا کہ آنے والے وقت میں طبی سہولیات مفت فراہم کی جائیں گی۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close