تازہ ترین خبریںدلی نامہ

ملک میں ویکسین کی فراہمی کے بعد VIP یا غیر VIP زمرہ نہیں ہونا چاہئے: اروند کیجریوال

نئی دہلی (امیر امروہوی)
ملک میں کورونا ویکسین کی بارے میں یہ خبر بڑی تیزی سے پھیل رہی ہے کہ آخر اس وباء کی ویکسین کب تک لوگوں کے درمیان پہونچے گی۔ ایسی معلومات سامنے آ رہی ہیں کہ کرونا کی ویکسین اگلے سال کے اوائل میں ہندوستان میں لوگوں کو دستیاب ہوگی۔ اس سلسلے میں مرکزی وزیر صحت ہرش وردھن نے بھی یہ امید ظاہر کی ہے کہ جلد ہی ملک میں کورونا ویکسین دستیاب ہوگی۔

اسی اثنا میں دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے ایک پروگرام کے دوران کہا کہ اس وقت پوری دنیا کے لوگ بے صبری سے کورونا وائرس ویکسین کا انتظار کر رہے ہیں۔ ایسی صورتحال میں، ملک میں اس کی فراہمی کے لئے وی آئی پی کیٹیگری نہیں بنانی چاہئے۔ اروند کیجریوال نے اپنا موقف رکھتے ہوئے کہا کہ اس وقت پوری دنیا کے لوگ کورونا وائرس ویکسین کا انتظار کر رہے ہیں۔ ایسی صورتحال میں، ملک میں اس کی فراہمی کے لئے وی آئی پی کیٹیگری نہیں بنانی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا ویکسین کے لئے کوئی سیاست نہیں ہونی چاہئے۔

اسی دوران، وزیر اعلی کیجریوال نے یہ بھی کہا کہ ویکسین انتظامیہ کے لئے ترجیحی فہرست میں کورونا جنگجوؤں اور کمزور عمر رسیدہ شہریوں کو اولیت دینی چاہئے۔ ویکسین کی فراہمی کے لئے VIP یا غیر VIP زمرہ نہیں ہونا چاہئے۔ اس ملک کا ہر شہری برابر ہے اور ہر ایک کی زندگی ہمارے لئے اہم ہے۔وہیں وزیر صحت ہرش وردھن کا کہنا ہے کہ ویکسین کی سمت میں تیزی سے کام کیا جارہا ہے۔ ہم ویکسین بنانے میں دنیا کے کسی بھی ملک سے پیچھے نہیں ہیں۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ 2021 کے اوائل تک ملک میں لوگوں کو یہ ویکسین دستیاب ہوجائے گی۔ انہون نے یہ بھی بتایا ہے کہ صحت کارکنوں اور بوڑھوں (65 سال سے زیادہ عمر کے افراد) کے لئے کورونا ویکسین پہلی ترجیح ہوگی۔

اس ضمن میں دہلی کے وزیر اعلی کہ امریکہ، چین، جرمنی، برطانیہ اور روس میں، کورونا ویکسین پر تیزی سے کام کیا جارہا ہے۔ ہندوستان میں بھی دیسی ویکسین کا ٹرائل تیز رفتار مرحلے میں داخل ہوگیا ہے۔ کہا جارہا ہے کہ روس اور امریکہ کی ویکسینیں 90 فیصد سے زیادہ موثر ہیں۔ ایک کمپنی نے یہاں تک کہ یہ بھی دعوی کیا ہے کہ وہ جلد ہی مارکیٹ کو مار دے گی۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close