اپنا دیشتازہ ترین خبریں

’ملک میں بڑھتے ہوئے تنازع کے لیے مودی-شاہ ذمہ دار‘: سی پی آئی

ہندوستان کی کمیونسٹ پارٹی (سی پی آئی)کے قومی سکریٹری ڈی راجہ نے ملک میں شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کے تعلق سے جاری تنازع کے لیے وزیراعظم نریندر مودی کو اور وزیرداخلہ امت شاہ کو ذمہ دار قرار دیا ہے۔

مسٹر راجہ نے اتوار کو یہاں پریس کانفرنس میں بی جے پی پر الزام لگایاکہ وہ سی اے اے پر ملک کے عوام کو گمراہ کر رہی ہے۔ انھوں نے یہ بھی کہاکہ مرکز نے کچھ علاقائی پارٹیوں کو ’خوف زدہ‘ کیا تھا جس کی وجہ سی اے اے راجیہ سبھا میں منظور ہو سکا تھا۔ مسٹر راجہ نے کہا،’’مرکز کی بی جے پی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت آئین کو بدلنے کی کوشش کر رہی ہے۔ ایسے میں یہ ضروری ہو جاتا ہے کہ سبھی لوگ سی اے اے کے خلاف متحد ہوں۔ ‘‘

مسٹر راجہ نے مرکز پر الزام لگایا کہ اس نے لوٹ کےلیے بڑے پیمانہ پر من مانے طریقہ سے سرمایہ کشی کی پالیسی اختیار کی ہے۔ سرمایہ کشی کی یہ پالیسی ملک کی معیشت کےلیےکافی نقصان دہ ثابت ہوگی۔ مسٹر ڈی راجہ نے مزید کہا کہ بھارت سنچار نگم لمیٹڈ(بی ایس این ایل) بحران میں ہے اور مرکزی حکومت ریلوے، کوئلہ اور دفاع جیسے مختلف شعبوں کی نجکاری کی کوشش میں ہے۔ انھوں نے مودی حکومت پر الزام لگایاکہ وہ لوگوں کی پریشانیوں کی طرف توجہ نہیں دے رہی ہے۔

انھوں نے کہا،’’مرکزی حکومت نے ہندوستانی لیڈروں کو جموں کشمیر کا دورہ کرنے کی اجازت دینے کے بجائے یوروپ کے ارکان پارلیمنٹ کو اجازت دی۔ اگر کشمیر میں حالات معمول پر ہیں تو مرکزی حکومت ہمیں ریاست کا دورہ کرنے کی اجازت کیوں نہیں دے رہی ہے۔‘‘ مسٹر راجہ نے کہا،’’سی پی آئی نے سنیچر کو ہوئی قومی ایگزیکٹیو کی میٹنگ میں سی اے اے کے تعلق سے’جمہوریت بچاؤ‘ اور ’بھارت بچاؤ‘ کے نعرے کے ساتھ ملک گیر تحریک چلانے کا ارادہ کیا ہے۔ ہم نے سبھی ہم خیال سیاسی پارٹیوں کو اس مہم میں حصہ لینے کے لیے مدعو کیا ہے۔

آندھراپردیش کی وائی ایس جگن موہن ریڈی حکومت کے تین راجدھانی شہر کے خیال پر انھوں نے کہاکہ سی پی آئی چاہتی ہے کہ امراوتی کو راجدھای بنایا جائے۔ تین راجدھانی کسی بھی طرح سے ریاست کے لیے فائدہ مند نہیں ہوگی۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close