تازہ ترین خبریںدلی نامہ

مصطفی آباد کا واحد بازار 25 فٹا روڈ بدحالی کا شکار، عوامی نمائندے غیر سنجیدہ

ٹوٹی سڑکیں، گہرے گھڈے، بے ترتیب نالیاں اور جگہ جگہ کوڑے کے ڈھیر سے عوام کی زندگی بنی ہوئی ہے اجیرن، کئی مرتبہ ممبر اسمبلی حاجی محمد یونس سے ملاقات کرکے روڈ کو ازسر نو بنانے کے لئے کہا گیا ہے جس پر کوئی توجہ نہیں دی گئی۔

نئی دہلی (امیر امروہوی)
مسلم آبادی پر مشتمل شمال مشرقی دہلی کا مصطفی آباد علاقہ کئی برسوں سے بدحالی کا شکار ہے اس علاقے کی گلیاں اور مین روڈ کی حالت اس قدر ناگفتہ بہ ہے کہ اسے تحریر کرنا محال ہے۔ ٹوٹی سڑکیں، گہرے گھڈے، بے ترتیب نالیاں اور جگہ جگہ کوڑے کے ڈھیرنے عوام کی زندگی اجیرن کر دی ہے۔ مصطفی آباد کا واحد بازار 25 فٹا روڈ ہے جس پر روز مرہ سے لیکر ضروریات کی ہر چیز مل جاتی ہے لیکن اس روڈ کی حالت نہایت خستہ ہے اس روڈ سے گزرنا پل صراط کے راستے پہ چلنے کے مترادف ہے، یہاں تک کہ دوکاندار اور خریدار دونوں ہی اس روڈ کی وجہ سے پریشان حال ہیں۔

دکاندار ذاکر حسین کا کہنا ہے کہ 25 روڈ کی حالت اتنی خستہ ہے کہ جس سے پوری مارکیٹ کا کاروبار متاثر ہے اور آنا جانا آسان نہیں ہے، پورا روڈ نہایت خراب ہے جس پرنالی نالوں کا گندہ پانی بھر جاتا ہے جس سے رکشہ پلٹنا، سائکلیں، اسکوٹر و موٹر سائیکلیں ٹکرانے سے چوٹیں لگنا لوگوں کا مقدر بنا ہوا ہے اور دور دور تک جام لگنا بھی عام بات ہے۔ محمد سلیم سیفی کا کہنا ہے کہ منتخب نمائندے کو اپنی ذمہ داری کا بلکل احساس نہیں ہے اور مصطفی آباد کے ایم ایل اے کو اپنی ذمہ داری کی کوئی پرواہ نہیں ہے کیونکہ کئی مرتبہ ممبر اسمبلی حاجی محمد یونس سے ملاقات کرکے روڈ کو ازسر نو بنانے کے لئے کہا گیا ہے جس پر کوئی توجہ نہیں دی گئی۔

علاقائی معروف عالم دین مفتی خلیل احمد قاسمی راضی کا کہنا ہے کہ مصروف ترین 25 فٹا روڈ برسوں سے خراب ہونے پر جگہ جگہ گڈھوں میں گندہ پانی بھرا رہتا ہے اور معمولی بارش ہوتے ہی ندی کی شکل اختیار کرلینے سے آمدو رفت بند ہوجاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حفظان صحت کے تعلق سے ایم سی ڈی کی طرف سے کوئی اقدامات نہیں کئے جاتے، نالیوں گلیوں میں دوائی نہیں ڈالی جاتی اور نہ ہی فاگنگ کا نظم ہے جس سے گندگی اور مچھروں کی بہتات سے لوگ طرح طرح کی بیماریوں میں ملوث رہتے ہیں۔ محمود حسن انصاری کا کہنا ہے اگر مصطفی آباد اسمبلی حلقہ کے تحت مسلم اکثریتی کالونیوں کو دیکھا جائے تو چھ سات برس قبل اس وقت کے ممبر اسمبلی حسن احمد نے سڑکوں اور گلیوں کو اپنے ایم ایل اے فنڈ اور جمنا پار ترقیاتی بورڈ سے کروڑوں روپئے حاصل کرکے ازسرنو تعمیر کرایا تھا جن کی حالت اب نہایت خستہ ہے جنہیں ازسر نو بنانے کی ضرورت ہے مگر موجودہ ایم ایل اے اس روڈ کو لیکر سنجیدہ نہیں ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close