اپنا دیشتازہ ترین خبریں

مسعود اظہر کو عالمی دہشت گرد قرار دینا مودی حکومت کی بڑی کامیابی: بی جے پی

اپنے عمل سے زیادہ اپنے قول پر یقین رکھنے والی بھارتیہ جنتا پارٹی کی ہمیشہ سے یہ روایت رہی ہے کہ کام کسی نے بھی کیا ہو اس کا پورا کریڈٹ لینے میں پیش پیش رہتی ہے. گزشتہ دن جب اقوام متحدہ کے سلامتی کونسل نے مسعود اظہر کو عالمی دہشت گرد قرار دے، تو بھلا یہ کیسے ممکن ہو سکتا ہے کہ بی جے پی اسکا کریڈٹ لینے میں پیچھے رہتی، لہٰذا بی جے پی کے صدر امت شاہ نے اس کا سہرا وزیراعظم نریندر مودی کے سر باندھتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نریندر مودی نے اپنی سفارتکاری سے پاکستان کو الگ تھلگ کر دیا ہے۔

امت شاہ آج مدھیہ پردیش کے راجگڑھ پارلیمانی حلقے کے بیاؤرا میں ایک انتخابی ریلی سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ مسعود اظہر نے کئی بم دھماکے کرائے لیکن اسے کوئی عالمی دہشت گرد نہیں قرار دلوا پایا۔ گذشتہ روز ہندوستان کے لیے سنہرا دن تھا۔ مسعود اظہر کو عالمی دہشت گرد قرار دیا گیا۔ مسٹر مودی نے اپنی سفارتکاری سے پاکستان کو الگ تھلگ کرنے کا کام کیا۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی حکومت نے جواہر لعل نہرو یونیورسٹی(جے این یو) میں ہندوستان(بھارت ماتا) کے ٹکڑے ٹکڑے کرنے کے نعرے لگانے والوں کو جیل میں ڈال دیا۔ اب راہل گاندھی کہتے ہیں کہ و ہ ملک سے غداری کے قانون کو ہی ہٹا دیں گے۔ کانگریس ملک کو کس سمت میں لے جارہی ہے۔

دوسری طرف بی جےپی ہیڈکوارٹر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے پارٹی کے سینئر لیڈر اور وزیرخزانہ ارون جیٹلی اور وزیر دفاع نرملا سیتارمن نے کہ دہشت گردی کے خلاف لڑائی میں یہ اہم کامیابی ہے۔ہر ہندوستانی کےلئے یہ فخر کا لمحہ ہے۔اس کےلئے پورے ملک نے وزیراعظم اور حکومت کی ستائش کی ہے۔انہوں نے کہا کہ ملک کی فتح ہر شہری کی فتح ہے۔ بی جےپی لیڈروں نے اس مسئلے پر کانگریس اور دیگر اپوزیشن پارٹیوں کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ دکھ کی بات ہے کہ یہ پورے ملک کےلئے جو فخر اور ستائش کی بات ہے اپوزیشن کے کچھ دوست اس کی بھی تعریف نہیں کررہے ہیں۔انہون نے کہاکہ اپوزیشن اسے بھی سیاسی مسئلے کے طورپر دیکھ رہی ہے۔

مسٹرجیٹلی نے اپوزیشن سے مثبت کردار ادا کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ جس کوشش میں ملک دس سال سے لگاہوا تھا اس میں کل کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ملک میں یہ روایت رہی ہے کہ خارجہ اور سلامتی پالیسی کے سلسلے میں سبھی متحد رہتے ہیں اس روایت کو توڑنے کا سلسلہ گزشتہ کچھ دنوں سے چل رہا ہے۔ملک کو جو فخر حاصل ہوا ہے اس میں اپوزیشن بھی مثبت کردار ادا کرے۔ اقوام متحدہ کے ذریعہ مسعود کو بین الاقوامی دہشت گرد قرار دئے جانے میں پلوامہ حملے کا ذکر نہ ہونے کے سلسلے میں انہوں نے کہا اپوزیشن کو یہ معلوم ہونا چاہئے کہ ’لسٹنگ کسی دہشت گرد کا بایوڈیٹا نہیں ہوتا ہے‘مسٹر جیٹلی نے کہا کہ یہ جگ ظاہر ہے کہ پلوامہ حملے کے بعد ہندوستان نے جو کوشش کی اسی کے نتیجے میں مسعود کو بین الاقوامی دہشت گرد قرار دیا گیا۔

سوالوں کے جواب میں مسٹر جیٹلی نے کہا کہ یہ فخر کی بات ہے کہ اس الیکشن میں حب الوطنی ایک موضوع ہے۔اس میں دفاعی ہونے کی کیا بات ہے بلکہ یہ شرم کی بات ہے کہ اپوزیشن پارٹیاں یہ مانتی ہیں کہ حب الوطنی انتخابی موضوع نہیں بنایا جانا چاہئے۔محترمہ سیتارمن نے کہا کہ دہشت گردی کے تئیں ’زیروٹولرینس‘ کی حکومت کی پالیسی کامیاب ثابت ہوئی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close