اپنا دیشتازہ ترین خبریں

لوک سبھا انتخاب سے قبل کانگریس کو جھٹکا، پارٹی کے سینئر لیڈر ٹام وڈکن بی جےپی میں شامل

کانگریس کے سینئر لیڈر اور ترجمان ٹام وڈکن نے آج یہاں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جےپی) کا دامن تھام لیا اور کہا کہ کانگریس نے ملک کے خلاف رخ اختیار کرلیا ہے جس سے ان کے پاس پارٹی چھوڑنے کے علاوہ کوئی متبادل نہیں رہ گیا تھا۔

بی جےپی کے سینئر لیڈر اور مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے مسٹر وڈکن کو پارٹی میں شامل کیا۔ کانگریس لیڈر سونیا گاندھی کے قریبی رہے مسٹر وڈکن کیرالہ کے تریچور ضلع کے رہنے والے ایک رومن کیتھولک خاندان سے آتے ہیں۔ بی جےپی میں ان کے شامل ہونےسے پارٹی کو کیرالہ میں فائدہ ہوگا۔

اس موقع پر مسٹر وڈکن نے کہا کہ انہوں نے بہت بھاری دل سے کانگریس چھوڑنے کا فیصلہ کیاہے۔ ملک پر پاکستانی دہشت گردوں کے حملے اور ہندوستان کے جواب پر جیسا ردعمل کانگریس نے ظاہر کیا، اس سے انہیں بہت دکھ پہنچا ہے۔ ہندوستان کے فوجی دستوں کی وفاداری پر سوال اٹھایا گیا تو ان سے رہانہیں گیا۔ انہوں کہا،’’بات نظریے کی نہیں،حب الوطنی کی ہے۔اگر سیاسی پارٹیاں ایسا رخ اختیار کرلیں جو ملک کے خلاف ہو تو میرے پاس کوئی متبادل نہیں بچتا سوائے ایسی پارٹی چھوڑنے کے۔‘‘

مسٹر وڈکن نے کہا کہ وہ وزیراعظم نریندر مودی کے ترقی کے خیالات اور ہندوستان کے سلسلے میں ان کے نظریے سے متاثر ہیں۔ اس کے لئے بہت محنت کی گئی ہے۔کانگریس میں وہ 20 سال تک رہے ہیں۔ وہاں اقربا پروری کی سیاست کی وجہ سے پروقار کارکنان کےلئے کوئی جگہ نہیں ہے۔ اب تو وہاں ’استعمال کرو اور پھینکو‘ کی پالیسی بھی کام کر رہی ہے۔ اس سے ان کی کانگریس میں پوری طرح سے دلچسپی ختم ہوگئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ وزیراعظم اور بی جےپی کے صدر امت شاہ کے شکرگزار ہیں جنہوں نے انہیں بی جےپی میں شامل ہونے اور ملک کے لئے کچھ کرنے کا موقع دیا ہے۔

اور دیکھاو

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close