آئینۂ عالمتازہ ترین خبریں

لبنان: احتجاجی مظاہروں کے بعد سعودی شہریوں کی محفوظ واپسی

بیروت میں سعودی عرب کے سفارت خانے نے لبنان میں موجود اپنے ملک کے شہریوں کو باحفاظت نکال لیا ہے۔ لبنان میں جمعرات کو احتجاجی مظاہروں کے آغاز کے بعد جمعہ کو سعودی سفارت خانے نے اپنے شہریوں کے انخلا کا آغاز کیا تھا اور لبنان میں مقیم تمام شہریوں سے کہا تھاکہ وہ انخلا کی تیاریوں کے سلسلے میں اس سے رابطے میں رہیں۔

واضح رہے کہ عکاظ اخبار نے لبنان میں سعودی عرب کے سفیر ولید بخاری کے حوالے سے بتایاکہ بیروت کے رفیق حریری انٹرنیشنل ایئر پورٹ سے پہلے مرحلے میں 260 سعودی شہریوں کو بھیجا جا چکا ہے۔ سعودی سفیر کے مطابق’ 800 سے 1200 تک ٹیلی فون کالز موصول ہوئیں جس میں سعودیوں نے مدد کی درخواست کی تھی ۔ان کے لیے سعودی سفارتخانے نے لبنان کی سیکیورٹی فورسز کی مدد سے رہائش اور ٹرانسپورٹ کے انتظامات کیے‘۔

سعودی عرب کی وزارت خارجہ نے بھی شہریوں کو لبنان کے سفر پر جانے سے خبردار کیا تھا اور وہاں موجود شہریوں کو ہر ممکن احتیاط برتنے کی ہدایت کی تھی۔ لبنان میں گذشتہ تین روز سے حکومت مخالف احتجاجی مظاہرے جاری ہیں اور ان ہزاروں افراد شرکت کر رہے ہیں۔ ان کا رْخ ملک کی سیاسی اشرافیہ کی جانب ہوگیا ہے اور اس عوامی احتجاجی تحریک کے شرکاء سیاسی اشرافیہ ہی کو ملک کو درپیش معاشی مسائل کا ذمے دار ٹھہرا رہے ہیں۔ وہ وزیراعظم، صدر اور پارلیمان کے اسپیکر سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

دارالحکومت بیروت میں احتجاجی مظاہروں کے دوران میں تشدد کے واقعات بھی پیش آئے ہیں اور پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپیں ہوئی ہیں۔ لبنان کی داخلی سلامتی کے ذمے دار ادارے کا کہنا ہے کہ جمعہ کو احتجاجی مظاہروں کے دوران میں 52 پولیس اہلکار زخمی ہوگئے تھے اور سکیورٹی فورسز نے 70 افراد کو گرفتار کر لیا تھا۔ دریں اثناء کویت اور متحدہ عرب امارات نے بھی اپنے شہریوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ لبنان کے سفر سے گریز کریں۔ بحرین نے اپنے شہریوں کو لبنان سے فوری طور پر نکل جانے کی ہدایت کی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close