اپنا دیشتازہ ترین خبریں

قومی اقلیتی کمیشن لفظ ’اقلیت‘ کی کرے تشریح، تین ماہ کے اندر دے جواب: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے قومی اقلیتی کمیشن کو تین ماہ کے اندر لفظ ’اقلیت‘ کی ازسر نو تشریح کرنے کا حکم دیا ہے۔

عدالت عظمی نے قومی اقلیتی کمیشن سے لفظ ’اقلیت‘ کی تشریح اس لئے کرنے کو کہا ہے تاکہ اقلیتی فرقہ کے افراد کو حکومت کی فلاحی و بہبودی اسکیموں کا فائدہ مل سکے ۔ چیف جسٹس رنجن گوگوئی کی صدارت والی بنچ نے آج بی جے پی کے سینئر لیڈر اورسینئر وکیل اشونی اپادھیائے کو اقلیتی کمیشن کے پاس دوبارہ اپنی درخواست پیش کرنے کے لئے کہا تاکہ تین ماہ کے اندر قومی اقلیتی کمیشن اس سلسلے میں فیصلہ کرسکے۔

بی جے پی لیڈر نے سپریم کورٹ سے اقلیت کی تشریح کرنے اور ریاستی سطح پر ان کی شناخت کے لئے ایک رہنما خطوط جاری کرنے کی اپیل کی ہے۔ مسٹر اپادھیائے نے اپنی عرضی میں کہا کہ شمال مشرقی ریاستوں میں ہندووں کی تعداد صرف دو سے آٹھ فیصد ہے۔ اس کے باوجود انہیں اکثریتی زمرے میں شامل کیا جاتا ہے جب کہ عیسائیوں کی تعداد اسی سے نوے فیصد تک ہے جنہیں اقلیت کا درجہ حاصل ہے اور انہیں بہبودی اسکیموں کا فائدہ ملتا ہے۔ عدالت اس معاملے کی اگلی سماعت 90 دن بعد کرے گی۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close