تازہ ترین خبریںرمضان کی بہاریں

فیزیو تھیروپی کے مریض کے لئے نماز بہترین ایکسر سائز: ڈاکٹر مبشر انصاری

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
رحمتوں اور برکتوں والے ماہ صیام کے مقدس ایام جاری ہیں۔ اس ماہ مبارک میں فرزندان توحید و دختران توحید کی یہ خواہش ہوتی ہے کہ وہ مالک حقیقی کی جانب سے فرض کئے روزوں کی ادائیگی کر سکیں اور اپنے رب خالق کا حکم بجا لا سکیں۔ لیکن وہ لوگ جو کسی مرض میں مبتلہ ہیں یا فیزیو تھیروپی کراتے ہیں ان کےلئے روزوں کی ادائیگی مشکل ہو جاتی ہے۔ آج کل اکثر مرد و خواتین میں پائی جانے والی جوڑوں کے درد، کمر درد، کولہے، کندھے، گردن اور گھٹنوں کے درد کی پریشانی میں فیزیو تھیروپی کرانے یا اس کی دوائیں کھانے کے سبب اکثر لوگ روزے رکھنے میں قاصر ہوتے ہیں۔ لیکن اگر وہ کچھ احتیاط برتیں تو آسانی سے روزہ رکھ سکتے ہیں۔

اس سلسلے میں فیزیو تھروپی کے ماہر فیزیو تھیروپسٹ ڈاکٹر محمد مبشر انصاری (علیگ ) نے کہاکہ جو لوگ بیک پین، سولڈر پین، جوائنٹ وغیرہ کے درد میں مبتلہ ہیں اور فیزیو تھیروپی کراتے ہیں، ایکسر سائز کرتے ہیں، ان کےلئے رمضان کا مہینہ میں کی جانے والی عبادت نعمت الہٰی سے کم نہیں۔ کیوں کہ آج سائنس بھی اس بات کو تسلیم کر چکا ہے کہ نماز ایک بہترین ایکسر سائز ہے۔ روزہ دارکے پانچ وقت نماز ادا کرنے اور صلاة التراویح میں اس کی بہترین ایکسر سائز ہو جاتی ہے۔ جس کے بعد فیزیو تھیروپی کے مریض کو زیادہ ایکسر سائز کرنے کی ضرورت نہیں پڑتی۔ کچھ چھوٹی موٹی کثرتیں کرنی پڑتی ہیں جن کو مریض آرام سے کر لیتا ہے۔

ڈاکٹر مبشر انصاری نے کہاکہ فیزیو تھیروپی کرانے والے روزہ دار کے لئے بہت ضروری ہے سات آٹھ گھنٹے مکمل آرام کریں، لیٹنے اور بیٹھنے میں فیزیوتروپسٹ کے بتائے ہوئے طریقے پر عمل کریں۔ اٹھنے بیٹھنے، کروٹ لینے میں ہاتھوں کا سہارا لیں، سیدھا کمر یا جوڑوں پر زور نہ ڈالیں۔ اچھی غذائیں استعمال کریں۔ لیکن ہائی پرو ٹین ڈائٹ، تلی بھنی، تیز مرچ مصالے والی ڈائٹ کا استعمال نہ کریں۔ لال گوشت، راجما اور مسور کی دال وغیرہ کا استعمال نہ کریں اور بغیر ملائی کا دودھ پئیں۔ یہ چیزیں فیزیوتھیروپی کے مریض کے لئے نقصان دہ ہیں۔ اگر گوشت کھانا ہو تو سفید گوشت، مرغ یا مچھلی کا استعمال کریں۔ اگر کسی مریض کو اپنی رو زانہ کی ایکسر سائزز سے بھی آرام نہ ملے اور روزے کی حالت میں کمر، کولہے، سولڈر یا جوڑوں وغیرہ میں کثرت سے درد محسوس کرے تو وولیٹرا جیل (volitra jel) یا پھر وولینی جیل (volini jel) کا استعمال کریں، اس سے درد میں بڑی راحت ملے گی۔ جن کے کمر میں درد ہو وہ جب کرسی پر بیٹھیں تو کرسی کی بیک سے کمر لگا کر بیٹھیں، ان کو اس سے آرام ملے گا، کیوں کہ زیادہ کام، وزنی یا کھڑے رہنے سے بھی بیک پین کی شکایت ہوتی ہے۔ فیزیو ٹھیروپی کے مریض اپنی دوائیں سحری میں اور افطار کے بعد لے سکتے ہیں۔

ڈاکٹرمبشر انصاری نے کہاکہ شدید گرمی کے موسم اور طویل وقت کے روزے کی حالت میں پانی کی کمی نہ ہو اس کےلئے روزہ دار کو سحر و افظار میں تھوڑا تھوڑا کرکے کثرت سے پانی کا استعمال کرنا چاہئے۔ دودھ، دہی، موسمی پھل، رسینے پھلوں کا تازہ جوس اور مختلف اچھے فلیورس کے مشروبات کا استعمال کریں۔ بازار کے کٹے کھلے پھل نہ کھائیں اور کولڈ ڈرنک قطعی نہ پئیں یہ نقصان دہ ہے۔ کسی مرض میں مبتلہ مریض اپنے ڈاکٹر کی صلاح سے دواﺅں کا وقت کا متعین کرکے روزہ رکھ سکتے ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close