اترپردیشتازہ ترین خبریں

غیر قانونی کانکنی معاملہ: بلند شہر ڈی ایم کے گھر سی بی آئی کا چھاپہ

مرکز جانچ ایجنسی (سی بی آئی) نے بدھ کو بلند شہر کے ڈی ایم ابھے سنگھ کے گھر پر کانکنی گھپلہ معاملے میں چھاپہ مارا اور ان سے اس ضمن میں پوچھ گچھ کی۔ آئی اے ایس بی چندر کلاں کے بعد مسٹر ابھے دوسرے آئی اے ایس ہیں جن کے خلاف کانکنی کے معاملے میں سی بی آئی نے چھاپہ ماری کی ہے۔

بلند شہر کے ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کے ساتھ ساتھ سی بی آئی ٹیم نے مرادآباد میں یو پی گرامن بینک جرنل منیجر سیلیش راجن کے گھر بھی بینک فراڈ معاملے میں چھاپہ ماری کی۔ ذرائع کے مطابق تین گاڑیوں میں سوار تقریبا 20 سی بی آئی افسران صبح بلند شہر کے ڈی ایم کے رہائش گاہ پہنچے اور گھر سے ڈی ایم اور ان کے افراد خانہ کے سواتمام افراد کو باہر کردیا۔ مسٹر سنگھ کے گھر چھاپہ ماری ان کے سماج وادی حکومت کے میعاد کار میں فتح پور کا ڈی ایم رہنے کے سیاق میں کی گئی ہے۔

سی بی آئی نے جنوری ماہ میں یو پی اور دہلی کے متعدد افراد کے گھروں پر غیر قانونی کانکنی کے حوالے سے چھاپہ ماری کی تھی۔ جنوری میں سی بی آئی نے جن افراد کے گھروں پر چھاپہ ماری کی تھی ان میں آئی اے ایس بی چندر کلاں (لکھنؤ) بی ایس پی لیڈر ستیہ دیو دکشت ار سماج وادی پارٹی ایم ایل سی رمیش مشرا (ہمیر پور) شامل ہیں۔ سی بی آئی اس وقت سابقہ سماجوادی پارٹی کے میعاد کارمیں غیر قانونی کانکنی کے الزامات میں اترپردیش کے پانچ اضلاع شاملی، ہمیر پور، فتح پور، سدھارتھ نگر میں جانچ کرر ہی ہے۔ سی بی آئی نے اس معاملے میں جانچ کا آغاز جولائی 2017 میں الہ آباد ہائی کورٹ کی ہدایت پر کیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق ہائی کورٹ نے سی بی آئی کو اس معاملے کی جانچ کی ہدایت اس مفاد عامہ کی اس عرضی پر سماعت کے بعد دیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ یو پی میں غیر قانونی کانکنی معاملے میں اترپردیش حکومت کے کئی افسران شامل ہیں۔ یاد رہے کہ غیر قانونی کانکنی کے خلاف آواز اٹھانے والے کئی پولیس اہلکار اور حکومت کے افسران کا قتل کیا جاچکا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close