اترپردیشتازہ ترین خبریں

عصمت دری متاثرہ کی آواز دبا رہی ہے یوگی حکومت: پرینکا گاندھی

کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی نے الزام لگایا ہے کہ اترپردیش حکومت عصمت دری کے ملزم اپنے سینئر لیڈر سوامی چنمیانند کو بچانے کی ہر ممکن کوشش کر رہی ہے اور متاثرہ کو ڈرا دھمکا کر اس کی آواز کو دبایا جا رہا ہے۔

محترمہ گاندھی نے آج ٹوئٹ کیاکہ اترپردیش میں مجرموں کو حکومت کی حمایت حاصل ہے جس سے وہ عصمت دری کی متاثرہ لڑکی کو ڈرا دھمکا سکیں۔ ریاست کی بی جے پی حکومت شاہ جہاں پور کی بیٹی کے لئے انصاف مانگنے کی آواز دبانا چاہتی ہے۔ پدیاترا روکی جا رہی ہے۔ ہمارے کارکنوں اور لیڈروں کو گرفتار کیا جارہا ہے۔ ڈر کس بات کی ہے؟ انہوں نے کہا کہ ریاست کی یوگی حکومت ادیتیہ ناتھ حکومت گھبرائی ہوئی ہے اور وہ جمہوری قدروں کی پرواہ کئے بغیر متاثرہ کی آواز دبا رہی ہے۔

انہوں نے ٹوئٹر پر لکھاکہ اقتدار کے گھمنڈ میں چور اترپردیش کی بی جے پی حکومت جمہوریت کی دھجیاں اڑا رہی ہے۔ عصمت دری کے ایک ملزم کو بچانے کے لئے اور شاہ جہاں پور کی بیٹی کی آواز کو دبانے کے لئے وہ کسی بھی حد تک گر سکتی ہے۔ اترپردیش میں ایک گھبرائی ہوی حکومت ہے۔ جیسے ہی اسے پتہ چلتا ہے کہ ان کے خلاف مظاہرہ ہونے والا وہ دفعہ 144 نافذ کر دیتی ہے۔ کانگریس کی مشرقی اترپردیش کی انچارج جنری سکریٹری نے کہاکہ عوام کے آواز کو دبایا نہیں جا سکتا۔ ناانصافی اور زیادتی کو چھپایا نہیں جا سکتا۔ جتنی کوشش کریں گے انصاف کی مانگ اتنی ہی بلند ہوتی جائے گی۔

شاہ جہاں پور کی لڑکی کو انصاف دیجئے۔ اپنے وزیر کو بچانا بند کیجئے۔ اس دوران کانگریس نے اپنے آفیشیل ٹوئٹر پر کہاکہ پارٹی کے سینئر لیڈر جتین پرساد کی قیادت میں کارکنان واقعہ کے خلاف پدیاترا نکالنا چاہتے تھے لیکن اس کے لیڈروں کو پہلے ہی حراست میں لے لیا گیا ہے۔ یہ ریاستی حکومت کی گھبراہٹ کا نتیجہ ہے۔ پارٹی نے کہاکہ“کانگریس کارکنان اور رہنما عصمت دری کے ملزم بی جے پی کے سابق ممبر پارلیمنٹ چنمیانند کو سزا دلانے کے لئے پدیاترا نکال رہے تھے۔ ریاستی حکومت کو یہ برداشت نہیں ہوا ہے۔ تبھی تو ان سب کو نظر بند کردیا گیا۔لیکن کب تک؟

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close