تازہ ترین خبریںمسلم دنیا

عراق میں حکومت مخالف مظاہرہ، ایران نے بند کیا سرحدی کراسنگ پوائنٹ

ایران نے عراق میں حکومت مخالف مظاہروں کی وجہ سے ایران۔عراق سرحدی کراسنگ پوائنٹ کو بند کردیا ہے۔ ان میں سے ایک کراسنگ پوائنٹ کو شیعہ اپنی سالانہ مذہبی تقریب کے لئے گذرگاہ کے طور پر استعمال کرتے ہیں۔ یہ اطلاع ایرانی بارڈر گارڈ کے کمانڈر قاسم رضعی نے جمعرات کو دی۔

ایران کے دفاع پریس نیوز نے قاسم رضعی کے حوالے بتایاکہ ’’عراق کے کچھ شہروں میں تصادم کی وجہ سے دو سرحدی کراسنگ پوائنٹ خسروی اور چازہ بیہ کو بند کردیا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہاکہ عراق میں سیکورٹی کی بحالی کے بعدان سرحدی کراسنگ پوائنٹ کو جلد ہی دوبارہ کھول دیا جائے گا۔ بدھ کے دن عراقی سیکورٹی سروس افسر نے اسپوٹنک کو بتایا کہ بغداد ائرپورٹ میں مظاہرین کو توڑ پھوڑ سے روکنے کے لئے آنسو گیس کا استعمال کیا گیا۔

مظاہرین منگل سے ملک کے جنوبی علاقے کے بغداد اور دیگر علاقوں میں مظاہرہ کر رہے ہیں۔ ان مظاہرین کا مطالبہ ہے کہ ملک میں معاشی اصلاح کی جائے اور بدعنوانی کا خاتمہ کیا جائے۔ اقوام متحدہ نے حکام پر زور دیا ہے کہ وہ تحمل سے کام لیں اور پرامن مظاہرین کے تحفظ کو یقینی بنائیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close