اپنا دیشتازہ ترین خبریں

عام انتخابات 2019: ٹکٹ کٹنے پر بی جے پی لیڈر کا چھلکا درد

آنجہانی فلم اداکار اور بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما ونود کھنہ کی بیوی کویتا کھنہ نے ہفتہ کو کہا کہ پارٹی نے انہیں پنجاب کے گرداس پور لوک سبھا سیٹ سے امیدوار بنانے کی یقین دہانی کرائی تھی لیکن انہیں ٹکٹ نہیں دیا گیا جس کا انہیں بے حد افسوس ہے۔

محترمہ کھنہ نے ونود کھنہ کی برسی پر یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ وہ گزشتہ 20 سال سے اپنے شوہر کے ساتھ گرداس پور کے علاقے کی ترقی اور وہاں کے لوگوں کے مسائل کو حل کے لئے کام کر رہی تھی اور ونود کھنہ کے انتقال کے بعد بھی وہ خدمت کے جذبے کےساتھ اس علاقے سے منسلک رہیں۔ انہوں نے جذباتی ہوتے ہوئے کہا کہ ٹکٹ نہ دیئے جانے سے انہیں بے حد دکھ ہے اور وہ خود کو الگ تھلگ محسوس کر رہی ہیں۔ علاقے کے لوگ اس سے غصے میں ہیں۔ پارٹی کو مستقبل میں ایسا نہیں کرنا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ وہ ایک قابل اور محنتی کارکن رہی ہیں اور وہ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں ملک کی ترقی کیلئے کام جاری رکھیں گی۔ وہ چاہتی ہیں کہ گرداس پور میں بی جے پی کے امیدوار انتخاب جیتے۔ یہ سیٹ مسٹر مودی کی جھولی میں جائے۔ بی جے پی میں حال ہی میں شامل ہونے والے اداکار سنی دیول کو یہاں سے امیدوار بنایا گیا ہے۔ انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ سنی دیول نے مہم کے لئے ان سے رابطہ نہیں کیا ہے۔ انہوں نے بی جے پی کے حق میں انتخابی مہم کے بارے میں کچھ نہیں کہا۔

محترمہ کھنہ نے کہا کہ وہ قوم پرست خاندان سے آتی ہیں اور بی جے پی کا ٹکٹ نہ ملنے کو ذاتی قربانی کے طور پر دیکھتی ہیں۔ وہ موقع کا فائدہ اٹھانے والوں میں سے نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کو امیدوار طے کرنے کا حق ہے لیکن گرداس پور سے ٹکٹ حاصل کرنے کا پہلا حق ان کا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ کنبہ پروری کے خلاف ہیں لیکن صلاحیت کو نظر انداز نہیں کیا جانا چاہئے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close