تازہ ترین خبریںمسلم دنیا

ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی معاملے میں عمران خان کو کمیشن کا نوٹس

پاکستانی انتخابی کمیشن (ای سی پی) نے گھوٹکی میں ضمنی انتخابات سے پہلے عمران خان کے وہاں کے دورہ کرنے پر ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کے معاملے میں جمعرات کو وجہ بتاؤ نوٹس جاری کرتے ہوئے ان سے ایک ہفتہ میں جواب کا مطالبہ کیا ہے۔

مسٹر عمران خان نے بدھ کو گھوٹکی کا دورہ کیا تھا۔ دورے کے دوران مسٹرعمران خان نے سابق وفاقی وزیر سردار محمد خان ماہرکے انتقال پر اپنے گہرے رنج وغم کا اظہار کیا تھا۔ گھوٹکی کے ضمنی انتخابات میں پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے امیدوار عبدالباری فتافی نے مسٹر عمران خان کے دورے کے سلسلے میں شکایت کی تھی۔ اسی شکایت کی بنیاد پر وزیراعظم کو نوٹس جاری کیا گیا ہے۔ مسٹر پتافی نے اپنی شکایت میں کہا ہے کہ وزیراعظم کی گھوٹکی کا دورہ انتخابی کمیشن کے 18 جولائی کو ضمنی انتخابات کے لئے نوٹی فیکیش جاری کرنے کے 9 دن بعد ہوئی ہے۔ وزیراعظم نے یہ دورہ وفاقی وزیر کے انتقال کے تقریبا ایک مہینے بعد کیا ہے۔

نوٹس میں کہا گیا ہے کہ“پارلیمنٹ کے رکن ہونے اور وزیراعظم کے عہد ہ پر فائز ہونے کی وجہ سے آپ اس بات سے پوری باخبر ہیں کہ ضمنی انتخابات کا اعلان کیا جاچکا ہے جس کی وجہ سے یہ ضروری ہے کہ آپ کسی بھی طور سے پارلیمانی حلقہ کا دورہ نہ کریں۔”انتخابی کمیشن نے مسٹر عمران خان سے نوٹس موصول ہونے کے بعد ایک ہفتہ کے اندر صورت حال واضح کرنے کو کہا ہے۔ نوٹس میں کہا گیا ہے کہ اگر یہ ہفتہ کے اندر جواب نہیں دیا گیا تو ان کے خلاف ضابطہ کی خلاف ورزی کی کارروائی کی جاسکتی ہے۔

مسٹر پتافی نے کمیشن کو بھیجی گئی شکایت میں کہا کہ مسٹر عمران خان نے پارلیمانی حلقہ کا دورہ کرکے انتخابی ضابطہ کی خلاف ورزی کی ہے۔ انہوں نے کمیشن سے وزیراعظم اور وفاقی وزرا اور ماہر خاندان کے امیدوار کے خلاف کارروائی کی درخواست کی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close