تازہ ترین خبریںدلی نامہ

شیلا دکشت کی قیادت میں کانگریس کے وفد کی وزیراعلی کجریوال سے ملاقات

پانی کی کمی اور بجلی کی کٹوتی سمیت بجلی کے بڑھے ہوئے فکس چارج پر کرائی توجہ مبذول

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
راجدھانی میں 15برس حکومت کی قیادت کر چکی دہلی کی سابق وزیر اعلی شیلا دکشت کی قیادت میں آج دہلی کانگریس کے وفد نے دہلی کے وزیر اعلی اروند کجریوال سے ملاقات کی اور ان کی توجہ دہلی میں پانی کی کمی، بجلی کی کٹوتی اور بجلی کے بڑھے ہوئے فکس چارج کی جانب دلا کر ان کے حل کرنے کا مطالبہ کیا۔ وفد سے ملاقات میں دہلی کے وزیر اعلی اروندکجریوال نے فکس چارج کے نام پر بجلی کمپنیوں کو فائدہ پہنچا نے کیلئے کروڑوں روپے کی رقم وصول کی تحقیقات کا حکم جاری کرنے کیلئے دہلی کانگریس کے وفد کے سامنے رضامندی ظاہر کی۔

وفد کی قیادت کرتے ہوئے شیلا دکشت نے توجہ دلائی کہ بجلی صارفین سے فکس چارج اور پنشن فنڈ کے نام پر 7401 کروڑ روپے وصول کئے گئے ہیں۔جسے کجریوال نے بھی قبول کیا کہ فکس چارج کے نام پر ڈسکام نے یہ رقم وصولی ہے۔ کانگریس وفد نے کجریوال سے کہا کہ فکس چارج اور پنشن فنڈ کے نام پر غیر قانونی طور پر صارفین سے وصولی گئی رقم کو فوری طور پر صارفین کو واپس کیا جائے اور مستقبل میں اس قسم کی وصولی نہیں کی جانی چاہئے۔ دہلی پردیش کانگریس کمیٹی کے سات رکنی وفد میں ایگزیکٹو چیئرمین ہارون یوسف، دویندر یادو اور راجیش للوٹھیا، دہلی حکومت کے سابق وزیر رماکانت گوسوامی اور ڈاکٹر کرن والیہ، ریاستی ترجمان جتیندر کمار کوچر اور ہرنام سنگھ شامل تھے۔

وزیر اعلی کجریوال سے ملاقات کے بعد نامہ نگاروں سے خطاب کرتے ہوئے ریاستی کانگریس ایگزیکٹو چیئرمین ہارون یوسف نے کہاکہ عام آدمی پارٹی کی دہلی حکومت نے فکس چارج اور پنشن فنڈ کے نام پر بجلی صارفین سے 7401 کروڑ وصول کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عام آدمی پارٹی کی دہلی سرکار کے وزیر دہلی کو یہ کہہ کر گمراہ کر رہے ہے کہ لوک سبھا انتخابات کے لئے ضابطہ اخلاق نافذ ہونے کی وجہ سے ہم فکس چارج کو واپس نہیں لے سکے تھے۔ جبکہ انتخابی ضابطہ اخلاق مارچ 2019 میں لاگو ہوا اور کانگریس پارٹی فکس چارج واپسی کے معاملے کو گزشتہ ایک سال سے مسلسل اٹھا رہی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close