اترپردیشتازہ ترین خبریں

شہید جوانوں کو خراجِ عقیدت پیش کرنے کے بعد اسمبلی کی کاروائی ملتوی

جموں وکشمیر کے پلوامہ ضلع میں سینٹرل ریزرو پولیس فورس( سی آر پی ایف) خود کش حملے میں شہید جوانوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے بعد اتر پردیش اسمبلی کی کاروائی جمعہ کوملتوی کر دی گئی۔

پارلیمانی امور کے وزیر سریش کھنہ نے ایوان میں تعزیتی قرارداد پیش کرتے ہوئے کہاکہ پڑوسی ملک پاکستانی اعانت یافتہ دہشت گرد تنظیم جیش محمد کی بزدلانہ حرکت سے پورا ملک دکھ میں ہے، اس حملے میں 41 بہادر جوان شہید ہوگئے جن میں 12 کا تعلق اترپردیش سے تھا۔ دکھ کی اس گھڑی میں پورا ملک ہندوستانی فوج اور شہید جوانوں کے سوگوار کنبوں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ یوگی حکومت نے ریاست کے شہید جوانوں کو فی کنبہ 25 لاکھ روپے کی امدادی رقم اور کنبے کے ایک فرد کو نوکری دینے کا علان کیا ہے۔ شہیدوں کی آخری رسومات پورے سرکاری عزاز کے ساتھ ادا کی جائے گی۔ اور اس موقع پر سرکار کی نمائندہ کے طور پر ایک وزیر، ضلع آفیسر اور سینئرپولیس سپرنٹنڈ موجود رہیں گے ۔ اپوزیشن کے لیڈر رام گوبند چودھری نے کہا کہ پانی اب سر سے اوپر چلا گیا ہے، دہشت گردوں کو ان ہی کی زبان میں جواب دینا ضروری ہو گیا ہے، مرکزی حکومت کو بغیر دیری کئے اس بارے میں ٖفیصلہ کرنا چاہئے۔ دشمن کو اس کے گھر میں گھس کر مارنے کی ضرورت ہے۔ ہمارے جوانوں کی شہادت رائیگاں نہیں جائے گی۔ پورے ملک شہید جوانوں کے سوگوار کنبوں کے ساتھ کھڑا ہے۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close