تازہ ترین خبریںمسلم دنیا

شہریت ترمیمی قانون کی ضرورت نہیں تھی: شیخ حسینہ

بنگلہ دیش کی وزیراعظم شیخ حسینہ نے شہریت ترمیمی قانون (سی اےاے) کے سلسلے میں کہا ہے کہ اسے پاس کرنے کی ضرورت کو وہ سمجھ نہیں سکیں ہیں اور اس قانون کی ضرورت نہیں تھی۔

محترمہ حسینہ نے گلف اخبارایجنسی کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ ’’ہم سمجھ نہیں سکے کہ ہندوستان نے اس قانون کو پاس کیوں کیا۔ اس کی ضرورت ہی نہیں تھی۔‘‘ انہوں نے حالانکہ سی اے اے کے سلسلے میں اپنی پہلی تنقید میں کہا ہے کہ یہ ہندوستان کا اندرونی معاملہ ہے۔ وزیراعظم نے کہا ہے کہ بنگلہ دیش نے ہمیشہ سے یہ مانا ہے کہ قومی شہریت رجسٹر (این آر سی) اور سی اےاے ہندوستان کا اندرونی معاملہ ہے۔‘‘

ہندوستانی حکومت نے بھی کئی مرتبہ کہا ہے کہ یہ ان کا اندرونی معاملہ ہے اور گزشتہ برس اکتوبر میں ہندوستان کے دورے کے دوران وزیراعظم نریندر مودی نے ذاتی طور پر اس معاملے میں یقین دہانی بھی کرایاتھا۔‘‘محترمہ حسینہ نے کہا ہے کہ موجودہ عہد میں ہندوستان اور بنگلہ دیش کے درمیان رشتے سب سے زیادہ گہرے ہیں۔

واضح رہے کہ مرکزی حکومت نے 12 دسمبر کو پارلیمنٹ میں سی اے بی کو پاس کیا تھا جن میں پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان میں مذہبی طور سے تشددکا سامنا کر رہے ہندو، جین، بودھ، عیسائی اور سکھ برادری کے لوگوں کو ہندوستان کی شہریت دینے کا التزام ہے۔ اس قانون کے سلسلے میں ملا جلا ردعمل آرہا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close