آئینۂ عالمتازہ ترین خبریں

شام میں فوجی مہم کے لئے ترکی نے مانگی فوجی امداد: امریکہ

امریکہ نے کہا ہے کہ ترکی نے شمالی شام میں اپنی فوجی مہم کے آغاز کے لئے امریکہ سے فوجی امدادکی مانگ کی تھی جسے ٹھکرا دیا گیا۔

امریکی وزارت خارجہ کے ایک سینئر افسر نے جمعرات کو کانفرنس کال میں یہ بات کہی۔ افسر کے مطابق امریکہ نے ترکی کو کسی بھی قسم کی فوجی امداد فراہم کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ ترکی نے کئی سطحوں پر امریکہ سے فوجی ا مداد کی مانگ کی تھی۔ ترکی کے صدر رجب طیب اردغان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان اتوار کو فون پر ہوئی بات چیت کے دوران بھی یہ مطالبہ کیا گیا تھا۔ افسر نے کہا کہ امریکہ ترکی کی فوجی مہم کی مخالفت نہیں کرے گا بلکہ وہ اسے روکنے کی ہر ممکن کوشش کرے گا۔ اس سے قبل ترکی نے بدھ کو شمالی شام میں کرد جنگجوؤں کی قیادت والی فوج اور داعش کے خلاف حملے کر کے ‘آپریشن پیس سپرنگ’ نامی اپنی فوجی مہم کی شروعات کر دی ہے۔

واضح رہے کہ امریکی حمایت یافتہ کرد جنگجو شام میں اپنے ساتھیوں کے ساتھ داعش کے خلاف لڑ رہے ہیں۔ شام کے شمالی علاقے میں اس وقت کرد جنگجوؤں کی قیادت والی سیریائی ڈیموکریٹک فورسز (ایس ڈی ایف) کا کنٹرول ہے۔ شام کی موجودہ حکومت نے ترکی کی اس فوجی مہم کی سخت مذمت کی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close