اترپردیشتازہ ترین خبریں

سی جی سٹی میں اسمبلی کی نئی عمارت بنانے کی تجویز محض دھوکہ ہے: اکھلیش یادو

سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے سربراہ اور سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو نے کہا کہ اترپردیش کی بی جے پی حکومت لکھنؤ کے چک گنجریا (سی جی) میں اسمبلی کی نئی عمارت اورسکریٹریٹ کی بیلڈنگ بنانے کی تجویز عوام کو دھوکہ دینے کی کوشش ہے۔

مسٹر یادو نے جمعہ کو یہاں جاری ایک بیان میں کہا کہ قانون اور انتظام پرکنٹرول نہ کرنے پانے سے شرمندہ بی جے پی اب اسی بہانے شہر سے باہر جانے کی سوچ رہی ہے تاکہ عوام سے مناسب دوری بنا کر اپنے کارنامے چھپا سکے۔ عوام اپنی مسائل اور پریشانیوں کے سلسلے میں بی جے پی سےکافی پریشان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی حکومت کے معیاد کار کا ایک تہائی وقت گذر چکا ہے۔ اب اس کی اقتدار سے روانگی کے لئے محض 40 ماہ ہی بچے ہیں۔ حکومت نے اپنے 20 ماہ بغیر کوئی کام کئے ہی گذردئیے ہیں۔ اس مدت میں بی جے پی حکومت نے اپنا کوئی عوامی کام سامنے نہیں لاپائی ہے۔ بس سماج وادی حکومت کے وقت جن کاموں کا افتتاح ہوچکا تھا ان کا ہی دوبارہ افتتاح کرنے میں وقت گذاری کر رہی ہے۔ جن ترقیاتی کاموں کا سماجوادی حکومت میں سنگ بنیاد رکھاچکا تھا ان کا بھی دوبارہ سے سنگ بنیاد رکھا جا رہا ہے۔

سابق وزیراعلی نے کہا کہ سبھی جانتےہیں کہ سماجوادی حکومت کے ہی وقت چک گنجریا کی توسیع اور ترقی کا کام شروع ہوا تھا۔ وہاں کینسر انسٹی ٹیوٹ، عالمی پیمانے کا اکانا اسٹیڈیم، اودھ شلپ گرام، سنسکرت اسکول، پولیس صدر دفتر کی نئی بیلڈنگ، لوکل باڈی کا ڈائرکٹریٹ ، ایچ سی ایل کی آئی ٹی سٹی، آئی آئی آئی ٹی، امول دودھ پلانٹ، اور کئی دیگر پروجکٹوں کا سنگ بنیا د رکھا جا چکا تھا۔ سماج وادی حکومت رہتی تو اب تک اس علاقے کے توسیع اور ترقی کا کام کافی ہوچکا ہوتا۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close