تازہ ترین خبریںکھیل کھلاڑی

سچن کے بعد اب وراٹ کی نظر سنگاکارا کے عالمی ریکارڈ پر، صرف ایک قدم دور

زبردست فارم میں چل رہے ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی ویسٹ انڈیز کے خلاف پیر کو ہونے والے چوتھے ون ڈے میں سری لنکا کے کمار سنگاکارا کے مسلسل چار سنچری بنانے کے عالمی ریکارڈ کی برابری کرنے اتریں گے۔

وراٹ نے ونڈيز کے خلاف موجودہ ون ڈے سیریز کے پہلے تین میچوں میں 140، ناقابل شکست 157 اور 107 رن بنائے ہیں۔ ہندستان نے گوہاٹی میں پہلا میچ جیتا۔ وشاکھاپٹنم میں دوسرا ٹائی کیا اور پنے میں تیسرا میچ گنوا دیا۔ وراٹ نے مسلسل تین سنچری سے ہندستانی کرکٹ میں بڑی کامیابی حاصل کی ہے اور وہ ون ڈے میں مسلسل تین سنچری بنانے والے پہلے ہندوستانی بلے باز بن گئے ہیں۔ ہندوستانی کپتان کے سامنے اب سنگاکارا کا 2015 کا عالمی ریکارڈ ہے۔ سنگاکارا نے 2015 کے ورلڈ کپ میں بنگلہ دیش کے خلاف ناقابل شکست 105، انگلینڈ کے خلاف ناقابل شکست 117، آسٹریلیا کے خلاف 104 اور اسکاٹ لینڈ کی خلاف 124 رن بنائے تھے۔ وراٹ کے پاس موقع ہے کہ وہ سیریز میں مسلسل چوتھی سنچری لگائیں اور سنگاکارا کے ریکارڈ کی برابری کریں۔

ون ڈے میں مسلسل تین سنچری بنانے والے دیگر بلے بازوں میں پاکستان کے ظہیرعباس، سعید انور اور بابر اعظم، جنوبی افریقہ کے هرشل گبز، اے بی ڈی ولیرس اور كوئنٹن ڈی کاک، نیوزی لینڈ کے راس ٹیلر اور انگلینڈ کے جانی بيرسٹو شامل ہیں۔ بيرسٹو نے 2018 میں ہی مسلسل تین سنچری بنائیں۔ وراٹ کی تیسرے ون ڈے میں سنچری ان کے ون ڈے کیریئر کی 38 ویں سنچری تھی، ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے 23 ویں اور کل 62 ویں بین الاقوامی سنچری تھی۔ کل بین الاقوامی سنچری بنانے کے معاملے میں وراٹ ابھی جنوبی افریقہ کے جیک کیلس کی برابری پرآ گئے ہیں اور مشترکہ طور پر چوتھے نمبر پر پہنچ گئے ہیں۔ کیلس نے 519 میچوں میں کل 62 سنچری بنائیں جبکہ وراٹ نے 349 میچوں میں ہی 62 سنچری بنا دی ہیں۔ سری لنکا کے سنگاکارا نے 594 میچوں میں 63 سنچری، آسٹریلیا کے رکی پونٹنگ نے 560 میچوں میں 71 سنچری اور ہندستان کے سچن تندولکر نے 664 میچوں میں 100 بین الاقوامی سنچری بنائی ہیں۔ وراٹ کی 2018 میں 12 میچوں میں یہ چھٹی سنچری تھی۔ وہ اس سال 144.12 کے زبردست اوسط سے 1153 رنز بنا چکے ہیں۔ ہندستان کے روہت شرما اور انگلینڈ کے جانی بيرسٹو نے اس سال چار چار سنچری بنائی ہیں۔

اس کے ساتھ ساتھ انہوں نے کرس گیل اور سوربھ گنگولی کے زیادہ انٹرنیشنل رنز کا ریکارڈ بھی توڑ دیا، گیل نے مجموعی طور پر 443 میچوں میں 18548 اور گنگولی نے 424 میچوں میں 18575 رنز بنا رکھے تھے جبکہ کوہلی نے 349 میچوں میں 18616 رنز بنا لئے ہیں۔ تندولکر اس فہرست میں بھی ٹاپ پر ہیں۔ انہوں نے 34357 رنز بنا رکھے ہیں۔ کوہلی اس فہرست میں بارہویں نمبر پر ہیں، اس کے علاوہ کوہلی نے ون ڈے کرکٹ میں ہم وطن کھلاڑی دھونی کو زیادہ رنز کی فہرست میں بھی پیچھے چھوڑ دیا، اسطرح وہ زیادہ رنز بنانے والے چوتھے ہندستانی بلے باز بن گئے ہیں،تندولکر 18426 رنز بنا کر سرفہرست ہیں، گنگولی 11363 رنز بنا کر دوسرے اور راہل دراوڑ 10889 رنز بنا کر تیسرے نمبر پر ہیں۔ دھونی نے 10150 رنز بنا رکھے تھے جبکہ کوہلی نے 10183 رنز بنا لئے ہیں۔

اتنا ہی نہیں وراٹ کوہلی نے ایک اور ریکارڈ اپنے نام کرلیا، نمبر تین پوزیشن پر بیٹنگ کرتے ہوئے 8 ہزار رنز بنانے والے دنیا کے تیسرے بلے باز بن گئےہیں۔ کوہلی نے یہ کارنامہ پونے میں ویسٹ انڈیز کے خلاف تیسرے ایک روزہ میچ کے دوران انجام دیا۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close