تازہ ترین خبریںکھیل کھلاڑی

سچن تندولکر آئی سی سی ’ہال آف فیم‘ میں شامل

ہندوستان کے لیجنڈ کرکٹر سچن تندولکر اور سابق جنوبی افریقی فاسٹ بولر ایلن بارڈر کو جمعہ کو باوقار آئی سی سی ہال آف فیم میں شامل کیا گیا۔

آسٹریلیا خواتین ٹیم کی فاسٹ بولر کیتھرین فٹزپیٹرك کو بھی آئی سی سی ہال آف فیم میں شامل کیا گیا ہے۔ لندن میں منعقد ایک پروگرام میں کرکٹ کی دنیا کی تینوں شخصیات کو یہ اعزاز دیا گیا۔ بین الاقوامی کرکٹ کونسل کے اصولوں کے مطابق کسی بھی کرکٹر کے بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کے پانچ سال بعد اس کے ہال آف فیم میں شامل کیا جا سکتا ہے، ایسے میں نومبر 2013 میں ریٹائر ہوئے سچن اس سال یہ اعزاز کے حقدار بن گئے۔

آئی سی سی کا یہ اعزاز حاصل کرنے والے سچن چھٹے ہندستانی کرکٹر ہیں۔ ان سے پہلے سنیل گواسکر، بشن سنگھ بیدی، کپل دیو، انل کمبلے اور راہل دراوڑ کو بھی یہ اعزاز حاصل ہوا ہے۔ سچن واحد کرکٹر ہیں جنہوں نے کیریئر میں 200 ٹیسٹ میچ کھیلے ہیں۔ ان کے نام ٹیسٹ فارمیٹ میں 15921 رنز اور ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ میں 18426 رنز درج ہیں۔ ان کے اس اعداد و شمار تک اور کوئی کرکٹر نہیں پہنچ پایا ہے۔ اس کے علاوہ وہ بین الاقوامی کرکٹ میں واحد ایسے کھلاڑی ہیں جنہوں نے کیریئر میں 100 سنچری لگائی ہیں۔ ان کے نام ٹیسٹ میں 51 اور ون ڈے میں 49 سنچری درج ہیں۔

سال 2011 میں عالمی کپ فاتح ٹیم کا حصہ رہے سچن نے ہال آف فیم کا اعزاز ملنے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ آئی سی سی ہال آف فیم میں جگہ ملنا اعزاز ہے۔ یہ کرکٹروں کے کھیل کے لئے دیئے گئے شراکت کا اعزاز ہے۔ اس میں شامل تمام کھلاڑیوں نے کھیل کی مقبولیت اور ترقی کے لئے اپنا کردار ادا کیا اور میں خوش ہوں کہ میں نے بھی اس میں اپنی شرکت ادا کی۔

ماسٹر بلاسٹر کے علاوہ جنوبی افریقہ بولر ڈونالڈ بھی آئی سی سی ہال آف فیم میں شامل ہو گئے۔ وہ سال 2004 میں کرکٹ کے تمام فارمیٹس سے ریٹائر ہوئے تھے۔ جنوبی افریقہ کے افسانوی تیز گیندبازوں میں شامل ڈونالڈ پہلے بولر ہیں جن کے نام ٹسٹ میں 300 وکٹ اور ون ڈے میں 200 وکٹ درج ہیں۔ ڈونالڈ نے ایک دہائی سے زیادہ وقت تک چلے اپنے کیریئر میں 602 بین الاقوامی وکٹ حاصل کئے۔

اس اعزاز پر انہوں نے کہاکہ سب سے بڑی حیرانی اس وقت ہوتی ہے جب آپ اس طرح کے ای میل دیکھتے ہیں۔ اس میں لکھا تھا مبارک ہو ایلن ڈونالڈ آپ کو آئی سی سی کرکٹ ہال آف فیم میں شامل کیا گیا ہے۔ یہ آپ کو ایک دم حیرت میں ڈال دیتا ہے۔ یہ بہت بڑا اعزاز ہے آپ اسے ہلکے میں نہیں لے سکتے۔ آئی سی سی کو اس بڑے اعزاز کے لیے بہت بہت شکریہ۔ فٹز پیٹرک ہال آف فیم میں جگہ پانے والی آٹھویں خاتون کرکٹر بنیں۔ سابق فاسٹ بولر کا کریئر 16 برس تک چلا۔ انہوں نے اپنے کیریئر میں 180 ون ڈے وکٹ لئے اور یہ اعداد و شمار حاصل کرنے والی وہ پہلی خاتون کرکٹر بنیں۔ اگرچہ مئی 2017 میں ہندوستان کی تیز گیند باز جھولن گوسوامی نے ان کے اس ریکارڈ کو توڑ دیا۔

آسٹریلوی کھلاڑی نے اپنی قومی ٹیم کو 1997 اور 2005 میں خواتین عالمی کپ جیتنے میں بھی اہم کردار ادا کیا اور مئی 2012 سے مئی 2015 کے درمیان ٹیم کی کوچ بھی رہیں۔ اس دوران ان کی رہنمائی میں آسٹریلوی ٹیم نے دو خواتین ٹوئنٹی 20 عالمی کپ خطاب جیتے۔فٹز پیٹرک نے کہاکہ کرکٹ کے سابق کھلاڑیوں کے درمیان آپ كو شناخت ملنا بہت بڑی بات ہے۔ میں پہلے کے ہال آف فیم کھلاڑیوں کی فہرست دیکھ رہی تھی۔ ان کھلاڑیوں کی صلاحیت مختلف نہیں ہے بلکہ یہ اس کھیل کے اصل ہیرو ہیں۔ ان کھلاڑیوں نے کھیل کے طریقوں کو ہی بدل کر رکھ دیا ہے۔

آئی سی سی کے چیف ایگزیکٹو منو ساہنی نے تينوں نئے ہال آف فیم کھلاڑیوں کو مبارکباد دیتے ہوئے ان کے کھیل کے لئے شراکت کی ستائش کی۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں سال 2019 کا یہ اعزاز کیلئے تینوں کرکٹروں کے ناموں کا اعلان کرتے ہوئے بہت خوشی ہو رہی ہے۔ سچن، ایلن اور کیتھرین سب اس کھیل کے عظیم کھلاڑی ہیں اور یہ شہرت حاصل کرنے کے حقدار بھی ہیں۔ آئی سی سی کی جانب سے میں انہیں اس باوقار کلب کا حصہ بننے پر مبارک باد دیتا ہوں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close