آئینۂ عالمتازہ ترین خبریں

سعودی تیل تنصیبات حملے کی جانچ میں امداد کرے گا فرانس

سعودی عرب کے ارامكو تیل تنصیبات پر حملے کی جانچ میں شامل ہونے کی دعوت کے بعد فرانس نے اپنے ہاتھ آگے بڑھائے ہیں۔ فرانس کے صدر امانائل میکرون نے بدھ کو سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان سے فون پر بات کی اور کہاکہ ارامكو تیل تنصیبات پر حملے کی جانچ میں فرانس کے ماہرین امداد کریں گے۔

ایک بیان کے مطابق ’’مسٹر میکرون نے تیل تنصیبات پر حملے کی سخت مذمت کی ہے۔ انہوں نے فرانس میں رہ رہے سعودی عرب کے لوگوں اور مسٹر سلمان کو یقین دہانی کرائی کہ فرانس تنصیبات پر ہوئے حملوں کی پختہ جانچ میں سعودی کی امداد کرے گا‘‘۔ مسٹر میکرون نے تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ فرانس سے ماہرین کی ٹیم کو جانچ میں شامل ہونے کے لئے بھیجیں گے۔ اس سے قبل منگل کے روز سعودی نے زمینی حقیقت کو قریب سے پرکھنے اور جانچ میں شامل ہونے کے لئے ہم نے اقوام متحدہ اور بین الاقوامی ماہرین کو مدعو کیا۔ انہوں نے بین الاقوامی برادری سے عالمی معیشت کو نقصان پہنچانے والوں کے خلاف سخت اور واضح موقف اپنانے کی بھی اپیل کی ہے۔

واضح رہے کہ ہفتہ کو سعودی کی دو پٹرولیم تنصیبات پر ڈرون سے حملہ کیا گیا تھا۔ سعودی دراصل حوثی باغیوں کے خلاف جنگ میں یمن کو فضائی حدود میں امداد مہیا کرا رہا ہے جس کے وجہ سے شروع میں خیال کیا جا رہا تھا کی یہ حملہ حوثی باغیوں نے کیا ہے، لیکن امریکی حکام نے اس کے پیچھے ایران کا ہاتھ ہونے کی بات کہی تھی۔ ایران نے امریکہ کے اس الزام کو مسترد کیا ہے۔ سعودی کی وزارت دفاع نے تاہم کہا ہے کہ وہ تیل تنصیبات پر حملے میں ایران کے ملوث ہونے کا آج ثبوت پیش کریں گے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close