آئینۂ عالمتازہ ترین خبریں

سری لنکا: گوتابایا راج پکشے ہوں گے اگلے صدر

سری لنکا کے سابق وزیر دفاع اور سری لنکا پپلز فرنٹ کے امیدوار گوتابایا راجپکشے ملک کے اگلے صدر ہوں گے۔

سری لنکا میں صدارتی انتخابات کے لئے کل پولنگ ہوئی۔ اتوار کو اب تک ہوئی ووٹوں کی گنتی میں مسٹر راج پکشے 50.7 فیصد ووٹوں کے ساتھ سب سے آگے ہیں جبکہ ان کے اہم حریف ساجت پریم داسا کو 43.8 فیصد ووٹ ملے ہیں۔ اسی دوران مسٹر راج پکشے کی پارٹی نے ایک بیان جاری کرکے صدارتی انتخابات میں جیت کا دعوی کیا ہے اور پرامن پولنگ کے لئے رائے دہندگان کا شکریہ ادا کیا۔ مسٹر پریم داسانے انتخابات میں میں شکست قبول کرلی ہے۔

سری لنکا میں حکمراں یونائیٹڈ نیشنل پارٹی کے امیدوار ساجت پریم داسا نے صدارتی انتخابات میں اتوار کو اپنی شکست قبول کرلی اور اپنے حریف مسٹر راج پکشے کو مبارکباد بھی دی۔ مسٹر پریم داسا نے ایک بیان میں کہا کہ لوگوں کے فیصلے کا احترام کرنا میرے لئے خوش قسمتی کی بات ہے۔ میں گوتابایا راج پکشے کو سری لنکا میں ساتواں صدر منتخب ہونے پر مبارکباد دیتا ہوں۔

الیکشن کمیشن کے مطابق نصف ووٹوں کی گنتی ہوگئی ہے مسٹر راج پکشے 50.7ووٹوں کے ساتھ آگے ہیں۔ ان کے اہم حریف مسٹر پریم داسا کو 43.8فیصد ووٹ ملے ہیں۔ ملک میں پولنگ کے لئے تقریباََ12,845مرکز بنائے گئے تھے اور 35امیدوار انتخابی میدان میں تھے۔

یہ الیکشن ملک کی تاریخ میں سب سے مہنگا الیکشن تھا۔ اس کی لاگت تقریباََ 7.5ارب سری لنکائی روپے (4.1کروڑ ڈالر) ہے۔ بڑا بیلٹ پیپر بڑی بیلیٹ پیٹیاں، انتخابی ڈیوٹی پر سیکڑوں فاضل ملازم اور پانی، ٹیلی فون اور بجلی کے بل جیسے فاضل خرچ ایسے عنصر ہیں جنہوں نے انتخابی بل کو بڑھا دیا ہے۔ الیکشن کمیشن پرامن انتخابات کرانے کیلئے 60,000 سے زیاد پولیس اہلکاروں کو تعینات کیا تھا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close