اپنا دیشتازہ ترین خبریں

سپریم کورٹ میں سبري مالا مندرمعاملہ میں جائزہ لینے کی عرضی دائر

کیرالہ کے سبري مالا میں واقع ايپاّ مندر میں سبھی عمر کی خواتین کے داخلہ کی اجازت دینے والے فیصلہ کے خلاف ایک نظرثانی درخواست دائر کی گئی ہے۔

دی نیشنل ايپاّ ڈیووٹي (ويمنس) ایسوسی ایشن نے نظر ثانی درخواست دائر کرکے سپریم کورٹ سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے حالیہ فیصلہ کا جائزہ لے۔ سپریم کورٹ کی پانچ رکنی آئینی بنچ نے 10 سے 50 سال کی عمر کی خواتین کے مندر میں داخلہ پر روک سے متعلق صدیوں پرانی روایت کو4:1کی اکثریت کے فیصلے میں ختم کر دیا تھا اور سبھی عمر کی خواتین کے مندر میں داخلہ کی اجازت دی تھی۔ اب سبري مالا مندر میں خواتین بھی بھگوان ايپا ّکا درشن کر سکتی ہیں۔

نظرثانی درخواست میں کہا گیا ہے کہ آئینی بنچ کے فیصلے سے آئین کے ا بتدائیہ میں فراہم کردہ نظریہ، اظہار،روایات، عقائد وعبادت کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ سبري مالا مندر میں ہر سال نومبر سے جنوری تک، عقیدت مند ايپاّ بھگوان کے درشن کے لئے جاتے ہیں، باقی پورے سال یہ مندر عام بھکتوں کے لئے بند رہتا ہے۔ بھگوان ايپاّ کے عقیدتمندوں کے لئے مکر سنکرانتی کا دن بہت خاص ہوتا ہے، اسی لیے اس دن یہاں سب سے زیادہ عقیدت مند پہنچتے ہیں۔

یہ مندر کیرالہ کے دارالحکومت ترواننت پورم سے 175 کلومیٹر دور پہاڑیوں پر واقع ہے۔یہ مندر چاروں طرف سے پہاڑیوں سے گھرا ہوا ہے۔ یہاں آنے والے عقیدت مند سر پر پوٹلی رکھ پہنچتے ہیں. وہ پوٹلی عطیہ سے بھری ہوتی ہے۔ روایت ہے کہ تلسی یا رُدراكش کی مالا پہن کر، ورت رکھ کراور سر پر عطیہ رکھ کرجو بھی شخص آتا ہے اس کی تمام منوكامنائیں پوری ہوتی ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close