اپنا دیشتازہ ترین خبریں

سابری مالا مندر: کیرالہ حکومت نظر ثانی کی درخواست دائر نہیں کرے گی: وزیر اعلی

وزیر اعلی پنارئي وجين نے سابری مالا مندر کے معاملے میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف ریاستی حکومت کی جانب سے نظر ثانی پٹیشن نہیں دائر کرنے کے اپنے فیصلے کو دوہراتے ہوئے منگل کے روز کہا کہ جولوگ بھگوان آیپا کے مندر میں خواتین کے داخلے کو روكنے کی کوشش کریں گے، ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

مسٹر وجين نے یہاں اپنے دفتر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ریاستی حکومت تمام عمر کی خواتین کو سابری مالا مندر میں داخل ہونے کی اجازت دینے کے سپریم کورٹ کے احکامات پر نافذ کروانے کے لئے مصروف عمل ہے۔ ان میں خاص طور پر 10 سے 50 سال کی عمر کی خواتین شامل ہیں۔ احتجاجی عقیدتمندوں کی طرف سے خواتین کے پامبا آنے پر تشدد کے سوال پر وزیر اعلی نے کہا کہ یہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ قانون و انتظام قائم رہے۔ مسٹر وجين نے کہا کہ حکومت سختی کے ساتھ ایسے واقعات سے نمٹے گی، جن سے خواتین کے مندر میں داخل کرنے کے حق کو خطرہ پیدا ہو۔

وزیر اعلی نے یہ بھی واضح کیا کہ ان کی حکومت نے اس معاملے میں مندر کے معاملے سے متعلق مذہبی سربراہان سے مندر کی رسم و رواج کے سلسلے میں مشورہ لینے کے بارے میں سرپم کورٹ کو مطلع کر دیا ہے۔ واضح ر ہے کہ سپریم کورٹ کی پانچ رکنی آئینی بنچ نے 10 سے 50 سال کی عمر کی خواتین کے مندر میں داخلے پر روک سے تعلق صدیوں پرانی روایت کو 4: 1 کے اکثریتی فیصلے سے ختم کر دیا تھا اور تمام عمر کی خواتین کے مندر میں داخلے کی اجازت دے دی تھی۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close