تازہ ترین خبریںرمضان کی بہاریں

روزہ دار موسمی پھلوں کا کثرت سے استعمال کریں: امام الدین ذکائی

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
رحمتوں اور برکتوں والے ماہ رمضان کے ایام جاری ہیں۔ با فضیلت ماہ صیام میں روزہ دار اللہ رب العزت کی بے شمار نعمتوں سے لطف اندوز ہوتے ہیں مختلف اقسام و انواع کے خورد نوش اشیاء کا استعمال بھی اس ماہ مبارک میں کثرت سے کیا جاتا ہے۔ شدید گرمی کے اس موسم میں کھانے پینے میں لاپروائی مختلف مسائل کا سبب بنتی ہے۔ ماہ صیام میں روزہ دار کس طرح کی خورد و نوش اشیاء کا استعمال کریں کہ وہ کسی طرح کی پریشانی کا شکار نہ ہوں اس سلسلہ میں ماہر طب یونانی اور معروف نیلم دواخانہ کے چیئر مین حکیم امام الدین ذکائی نے کہا کہ روزہ انسان کے جسم میں موجود فاسق خون کو دور کرکے جسم میں ایک نئی توانائی پیدا کرتا ہے ساتھ ہی خالی پیٹ رہنے سے جسم کے اعضاء کا کام کرنے کا نظام درست ہو جاتا ہے۔ اس لئے حکمت کی نظر سے روزہ صحت کے لئے فائدہ مند ہے لیکن اس شدید گرمی کے موسم میں کچھ احتیاط بھی ضروری ہیں۔

حکیم امام الدین ذکائی نے کہا کہ جو لوگ کسی مرض میں مبتلا ہیں وہ اپنے طبیب کے مشورہ کے بعد ہی روزہ رکھیں۔ انھوں نے کہاکہ جگر کی وجہ سے جسم میں کئی طرح کی پریشانی پیدا ہوتی ہیں جس کے لئے ہاضمہ کے نظام کو درست رکھنا ضروری ہے۔ تیز مسالے دار، چکنائی والے، تلے بھنے، ثقیل کھانوں سمیت تیز ٹھنڈے پانی، کولڈ ڈرنگ سے ہاضمہ بگڑ جاتا ہے اس لیے ان سے پرہیز بہت ضروری ہے ہاضمہ خراب ہونے سے الرجی، خون میں گرمی، جگر اور معدہ میں سوجن، آنتوں میں سختی اور الٹی دست کی شکایت آتی ہے، اسلئے روزہ دار کو چاہئے کہ جہاں تک ہو سکے ہلکے مسالے اور شوربے والے سالن سبزیوں کا استعمال کریں۔ بڑے کا گوشت، کھٹائی اور بادی چیزوں کا استعمال نہ کریں، دودھ دہی، موسمی پھلوں کا استعمال کریں۔

حکیم امام الدین ذکائی نے کہا کہ روزہ دار کو کسی بھی وجہ سے پیش آنے والی پریشانی سے بچنے اور دماغ و قوت کو قابو میں رکھنے کے لئے ’عرق بید مشک‘ کا استعمال کرنا چاہئے، ایک تولہ عرق دوسو گرام پانی میں شربت بنا لیں اور اس کو سحر و افطار میں استعمال کریں دیگر مشروبات کی جگہ یہ شربت پورے گھر کے لئے سحر افطار میں بناکر استعمال کریں اس کے استعمال سے قلب و دماغ کو سکون ملے گا اور دوران روزہ ہونے والی گھبراہٹ سے نجات ملے گی۔

روزہ کی حالت میں زیادہ نہانا، برف کا جسم پر لگانا ٹھیک نہیں ہے اس سے نزلہ، بخار، کھانسی وغیرہ کا خدشہ رہتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ گرمی کا موسم ہے اس لئے پودینہ کا جلجیرہ، بیل گری کا شربت اور تازہ پھولوں کا رس استعمال کرنے سے قوت و توانائی باقی رہے گی اس کے ساتھ ہی جسم کی نمکیات کو دور کرنے کے لئے نمک چینی اور لیمو کی شکنجی بناکر استعمال کی جائے، ٹھنڈے پانی، تیز ٹھنڈے مشروبات او ر کولڈ ڈرنگ سے دور رہیں یہ مضر صحت ہیں۔

انھوں نے کہا کہ کھجور اور دودھ کا شیک صحت کے لئے مفید ہے، سحر و افطار میں دودھ، دہی لچھی، چھاچھ، تازہ پھلوں کا رس، انار، سنترے، موسمی، دیگر موسمی پھل ترپوز کا استعمال بہت مفید ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Close