دلی این سی آر

رنديپ سنگھ سرجے والا کے والد کا انتقال، کانگریس کا اظہار تعزیت

کانگریس میڈیا شعبے کے سربراہ رنديپ سنگھ سرجے والا کے والد اور ہریانہ کانگریس کے سابق صدر شمشیر سنگھ سرجے والا کا طویل علالت کے بعد آج انتقال ہوگیا۔ جس پر کانگریس کی صدر سونیا گاندھی، سابق صدر راہل گاندھی سمیت کئی لیڈروں نے اپنی تعزیت کا اظہار کیا ہے۔

واضح رہے کہ شمشیر سنگھ سرجے والا نے اپنی طویل سیاسی زندگی میں ہریانہ پردیش کانگریس کے صدر اور ریاستی اسمبلی میں حزب اختلاف کے لیڈر بھی رہے ہیں۔ اس کے علاوہ اکھل بھارتیہ کسان کانگریس کے صدر رہے مسٹر سرجے والا 1967، 1977، 1982، 1991 میں نروانا اور 2005 میں کیتھل سے ہریانہ اسمبلی کے رکن رہے۔مسٹر سرجے والا نے ہریانہ حکومت میں چار مرتبہ وزیر کے عہدے کی ذمہ داری نبھائی اور وہ راجیہ سبھا رکن پارلیمنٹ بھی رہے۔

کانگریس کی صدر سونیا گاندھی نے مسٹر سرجے والا کے انتقال پر گہرا دکھ ظاہر کرتے ہوئے ان کے انتقال کو پارٹی کے لئے بڑا نقصان قرار دیا ہے۔ انہوں نے مسٹر سرجے والا کی اہلیہ ودیا سرجے والا کو بھیجے ایک تعزیتی پیغام میں کہا کہ اپنی سیاسی زندگی میں مسٹر سرجے والا نے حکومت میں رہ کر اور اپوزیشن کے لیڈر کے طورپر ہریانہ کے مفاد کے لئے اہم کردار ادا کیا ہے۔ وہ غیرمتنازعہ شخصیت تھے جو عوام کے خدمت گار کے طورپر اورکانگریس کے تئیں وقف رہے اور ہریانہ میں کانگریس ان کی قیادت میں مزید مضبوط ہوئی۔

کانگریس کی صدر نے کہاکہ مسٹر سرجے والا نے وقف ہوکر کسانوں کے حقوق کی لڑائی لڑی اور کسانوں کے لئے کئی اہم تحریکیں چلائیں۔ انہوں نے کہا کہ کم ہی لیڈر ہوتے ہیں جن کی اپنے حامیوں پر اتنی گہری چھاپ ہوتی ہے۔ سماج کو آگے بڑھانے کے لئے انہوں نے جو تعاون دیا ہے عوامی خدمت سے وابستہ لوگوں کے لئے ان کا کام ہمیشہ ترغیب کا ذریعہ بنا رہے گا۔ انہوں نے ان کے کنبہ کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ میں دکھ کے اس لمحہ میں متاثرہ کنبہ کے ساتھ ہوں اور مسٹر سرجے والا کو اپنی خراج عقیدت پیش کرتی ہوں۔

ان کےعلاوہ کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے مسٹر سرجےوالا کے انتقال پر رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ "مسٹر شمشیر سنگھ سرجےوالا کے انتقال سے ہم نے ایک ایسے مقبول اور معروف کانگریس لیڈر کو کھو دیا ہے جس نے ملک کے کسانوں اور ہریانہ کی ترقی کے لئے کافی کام کیا ہے۔میں ان کے رشتہ داروں اور دوستوں کے تئیں اپنی تعزیت کا اظہار کرتا ہوں۔ "

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close