اپنا دیشتازہ ترین خبریں

رتھ یاترا معاملہ: بی جے پی کی اپیل پر ممتا حکومت کو نوٹس

سپریم کورٹ نے مغربی بنگال میں رتھ یاترا معاملے میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی ریاستی یونٹ کی اپیل پر ریاستی حکومت کو منگل کے روز نوٹس جاری کیا۔

مغربی بنگال بی جے پی نے ریاست میں اس مجوزہ رتھ یاترا پر روک لگانے کے کلکتہ ہائی کورٹ کے حکم کے خلاف سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے۔ جسٹس ایل ناگیشور راؤ اور جسٹس سنجے کشن کول کی بنچ نے بی جے پی کی اپیل پر ریاستی حکومت کو نوٹس جاری کرکے جوابی حلف نامہ دائر کرنے کی ہدایت دی ہے۔ عدالت نے معاملے کی سماعت کے لئے 15 جنوری کی تاریخ مقرر کی ہے۔

ہائی کورٹ کی یک رکنی بنچ نے رتھ یاترا کو اجازت دے دی تھی، جبکہ دو رکنی بنچ نے اس حکم کو انٹیلی جنس اطلاعات کی بنیاد پر پلٹ دیا تھا۔ دو رکنی بنچ نے اپنے حکم میں کہا تھا کہ یک رکنی بنچ نے اپنا فیصلہ سناتے وقت 30 سے زائد انٹیلی جنس کی ان رپورٹوں پر توجہ نہیں دی تھی، جن میں بی جے پی کی رتھ ياتراؤں سے ریاست میں فرقہ وارانہ ماحول متاثر ہونے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔

بی جے پی کا ریاست کے مختلف علاقوں سے تین رتھ ياترائیں نکالنے کا منصوبہ ہے جو 42 علاقوں سے ہو کر گزرے گي۔ ریاستی بی جے پی نے اپنی خصوصی اجازت والی درخواست میں کہا ہے کہ اس کی رتھ ياتراؤں پر روک لگانا آئین کے آرٹیکل 19 (اے) اور 21 کے تحت فراہم کردہ بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close