اپنا دیشتازہ ترین خبریں

راجستھان میں تیسرا مورچہ نہیں، لیکن کئی سیٹوں پر بڑی پارٹیوں کو مشکلیں

راجستھان اسمبلی انتخابات میں کانگریس اور بی جے پی کے سامنے تیسرا مورچہ نہیں بن پایا لیکن کئی سیٹوں پر چھوٹی موٹی پارٹیوں نے مقابلے کو سہ رخی بنا دیا ہے۔

ریاست میں راشٹریہ لوکتانترک پارٹی، بھارت واہنی ، عام آدمی پارٹی، بہوجن سماج پارٹی اور کمیونسٹ پارٹی ایک ہوکر تیسرے محاذ کی شکل نہیں دے پائے لیکن ان کے بہت سے امیدوار کانگریس اور بی جے پی کو سخت ٹکر دے رہے ہیں۔بھارت واہنی نے 75 ،بی ایس پی نے 198 اور راشٹریہ لوکتانترک پارٹی نے 68 امیدواروں کو انتخابی میدان میں اتارا ہے۔ نامزدگی واپس لینے کی تاریخ پرہی صحیح تصویر سامنے آئے گی لیکن موجودہ حالات میں مقابلہ سہ رخی کے ساتھ چہاررخی دکھائی دے رہا ہے۔راشٹریہ لوکتانترک پارٹی نے جاٹ اکثریتی حلقوں میں کانگریس اور بی جے پی کے دانٹ کھٹے کرنے کی پوزیشن میں کھڑا کر دیا ہے۔

کسان تحریک کے ذریعہ ناگور، سیکر، باڑ میر، جودھپور اضلاع میں پہلے ہی زمین مضبوط کرکے اس پارٹی نے دونوں بڑی پارٹیوں کے ٹکٹ سے محروم رہے لیڈروں کو بھی امیدوار بناکر پوزیشن مضبوط کر لی ہے۔ اس پارٹی کے لیڈر ہنومان بینی وال نے ایک بار کانگریس اور ایک بار بی جے پی کو اقتدار دینے کی روایت پر بھی چوٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے بدعنوانی پنپ رہی ہے اور دونوں ایک دوسرے کو بچا لیتے ہیں۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close