تازہ ترین خبریںدلی نامہ

راجدھانی کے تشدد زدہ علاقوں میں دہلی اقلیتی کمیشن متحرک

حملہ آوروں پر کاروائی کا ڈی سی پی سے جواب طلب، مصطفی آباد عید گاہ کیمپ میں شکایت کیلئے ہیلپ ڈیسک قائم، ہیلپ لائن نمبر کئے جاری

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
شمال مشرقی دہلی میں ہوئے فرقہ وارانہ فسادات کی آگ تو بجھ گئے ہے لیکن اس آگ میں سیکڑوں خاندان تباہ ہوگئے، سہاگ اجڑ گئے اور گودیں ویران ہو گئی ہیں۔ سیکروں افراد بے گھر ہو کر راحت کیمپوں میں پناہ لئے ہوئے ہیں۔ جن کی حکومت، سرکاری اور غیر سرکاری تنظیموں اور اداروں کی جانب سے امداد کی جا رہی ہے اور ان کے گھروں کو واپسی کی کوششیں جاری ہیں۔ فسادات کی تحقیق کرنے کیلئے دہلی اقلیتی کمیشن کی جانب سے فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی بھی تشکیل دی ہے۔ کمیشن کی اس دس ممبران پر مشتمل تحقیقاتی کمیٹی نے شمالی مشرقی ضلع کے تشدد زدہ علاقوں میں مستعدی سے اپنا کام شروع کر دیا ہے۔

دہلی اقلیتی کمیشن کے صدر ڈاکٹر ظفر الاسلام خان، ممبران کرتار سنگھ کوچر اور انستا سیاگل متاثرہ علاقوں میں مستقل جاکر فساد متاثرین سے ملاقاتیں کر رہے ہیں تاکہ متاثرین کی مدد کی جا سکے اور ان کی ہمت بڑھائی جا سکے۔ کمیشن کے والنٹیرز متاثرین میں ریلیف کی تقسیم بھی مستقل کر رہے ہیں۔ جس میں متعدد این جی اوز، بالخصوص ایکشن ایڈ، حصہ لے رہے ہیں۔

دہلی اقلیتی کمیشن کے چیئر مین ڈاکٹر ظفر الاسلام نے بتایا کہ کمیٹی کی صدارت سپریم کورٹ کے ایڈوکیٹ آن ریکارڈ ایم آر شمشاد کر رہے ہیں۔ تقریبا 30 والنٹیر اس کمیٹی کی مدد کر رہے ہیں۔ جس میں جان و مال کا اصل نقصان کا کمیشن کے تیار کردہ مفصل فارموں میں اندراج کرنا شامل ہے۔ یہ کام متاثرین کے گھر، دکان یا کیمپ میں جاکر کیا جا رہا ہے۔ ہر بھرے گئے فارم کی رسید بھی متاثر شخص کو دی جاتی ہے۔ دہلی اقلیتی کمیشن پورے معاملے پر نظر رکھ کر ان متاثرین کو بعد میں معاوضہ و انصاف دلوائے گا جن کے فارم افسران نہیں بھر رہے ہیں یا جن کے ایف آئی آر پولیس تھانوں میں نہیں درج ہو رہے ہیں۔

کمیشن کی تحقیقاتی کمیٹی کے ممبران متاثرین، پولیس اور مقامی انتظامیہ سے مل کر کام کر رہے ہیں تاکہ تشدد کے حقائق، اس کے ذمے دار اور بعد کے حالات کا پوری طرح احاطہ کیا جا سکے۔ کمیشن نے مصطفی آباد عید گاہ کیمپ میں بھی ایک ہیلپ ڈیسک لگایا ہے جہاں متاثرین آکر شکایت درج کرا سکتے ہیں، مدد طلب کر سکتے ہیں یا فارم بھر سکتے ہیں۔ کمیشن نے پورے متاثرہ علاقہ میں 40نوٹس بورڈ بھی آویزاں کر دیئے ہیں۔ جس میں فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی کے بنانے کے بارے میں اطلاع کے ساتھ تین ہیلپ لائن نمبر 8076282502/9540060606/9717455303 دیئے گئے ہیں، جن کے ذریعے ان والنٹیرز سے رابطہ قائم کیا جا سکتا ہے۔

کمیشن کے چیئر مین ڈاکٹر ظفر الاسلام نے بتایا کہ دہلی اقلیتی کمیشن نے دہلی پولیس کو شمال مشرقی دہلی ضلع میں بھڑکنے والے تشدد کے بارے میں متعدد نوٹس جاری کئے ہیں۔ ان میں شامل ایک نوٹس میں کمیشن نے ڈی سی پی نارتھ ایسٹ کو علاقے میں نوجوانوں کی بلا وجہ گرفتاریوں کے خلاف وارننگ دی ہے اور کہا ہے کہ دستاویز ی ثبوت ملنے پر متعلقہ پولیس افسران کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔ ایک اور نوٹس میں کمیشن نے ڈی سی پی نارتھ ایسٹ سے تشدد سے متعلق تمام ایف آئی آرز کی لسٹ مانگی ہے اور اسی کے ساتھ ان تمام شکایتوں کی کاپی بھی مانگی ہے جن کو ایف آئی آر میں تبدیل نہیں کیا گیا ہے۔

اس کے علاوہ کمیشن نے ڈی سی پی نارتھ ایسٹ کو چار فوٹو بھیجے ہیں جن میں پہچان میں آنے والے لوگ 24 فروری کو بھجن پورہ مارکیٹ کے نزدیک واقع انڈر پاس کے پاس محمد زبیر کی لنچنگ (اجتماعی قتل) کی کوشش کر رہے ہیں۔ ان حملہ آوروں میں سے ایک کی شناخت اننت بھاردواج کے طور پر ہوئی ہے۔ کمیشن نے ڈی سی پی سے پوچھا ہے کہ ان حملہ آوروں کے خلاف کیا کارروائی ہوئی، اور اگر نہیں ہوئی ہے تو کیوں؟ اس کے علاوہ کمیشن نے ضلع مجسٹریٹ نارتھ ایسٹ سے علاقے کیا یس ڈی ایم آفسوں میں معاوضے کے لئے بھرے گئے فارموں کی مکمل لسٹ طلب کی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close