تازہ ترین خبریںصحت و تندرستی

ذیابیطس مرض کے معاملہ میں ہندوستان دنیا میں دوسرے نمبر پر

حیدرآباد میں پبلک گارڈن واکرس ایسوسی ایشن کا ماہانہ ہیلت لکچر

ڈاکٹر ورندا گروال سینئر کنسلٹنٹ کیر اسپتال حیدرآباد نے کہا کہ انسانی جسم کے اعضاء کا تال میل ایک قدرتی کرشمہ ہے۔ اعضاء جسمانی دماغ، جلد، قلب، گردے اور رگ پٹھے اپنی اپنی کارکردگی کے لحاظ سے مخصوص کام انجام دیتے ہیں مگر ان میں تال میل ہوتا ہے، ان سب میں ہدایات کے لیے کیمیائی پیغام رسانی کے ذریعہ ربط ہوتا ہے جس کی وجہ سے انڈرونک نظام کے غدود ہارمونس پیدا کرتے ہیں۔ ہارمونس مختلف عملوں کے ذریعہ نمو اور پختگی کا کام کرتے ہیں۔ہارمونس میں اگر توازن باقی نہ رہے تو یہ نمو اور پختگی پر اثر انداز ہوتے ہیں اور یہ ذیابیطس، ہڈیوں میں نقاہت اور تولیدی مادے کی خرابیوں کا باعث ہوتاہے۔

انہوں نے حیدرآباد میں پبلک گارڈن واکرس ایسوسی ایشن کی جانب سے اندرا پریہ درشنی آڈیٹوریم باغ عامہ میں ہیلت لکچر دیتے ہوئے کہا کہ بالغوں میں ذیابیطس مرض کے معاملہ میں ہندوستان دنیا میں دوسرے نمبر پر ہے اور ہندوستانی بچے ٹائپ ون ذیابیطس کے دوسرے نمبر پرہے۔ اس کے علاوہ لاکھوں کی تعداد میں ہندوستانی اس مرض کے شکار ہونے کے آثار رکھتے ہیں جو تشویش کی بات ہے۔

حالیہ علاج معالجہ کی ترقی سے جدید طرز کی دوائیں، انسولین، گلوکوز اور توازن قائم رکھنے کا علاج سامنے آیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آئے دن جسامت اور وزن میں اضافہ بھی بہت تیزی سے نقصان کا سبب ہورہا ہے، خصوصاً غریب ممالک میں اس کی شرح بہت تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ ہمارے ملک میں اب لیٹوٹک سنڈورم اور ٹائپ ٹو ذیابیطس موٹاپے سے نمو پاتے ہیں۔ ایسی صورت حال سے نمٹنے کے لیے عوام میں معلومات کو عام کرنے کی ضرورت ہے۔

مسٹرغلام یزدانی چیرمین پبلک گارڈن واکرس ایسوسی ایشن نے خطاب پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ واکرس ایسوسی ایشن ہیلت لکچرس میں آڈیو ویڈیو کی سہولتوں کے ساتھ صبح کی اولین ساعتوں میں شہر کے مرکزی مقام باغ عامہ میں بپابندی منعقد ہورہے ہیں۔ پروفیسر محمد مسعود احمد ہیلت کیر اڈوائزر ایسوسی ایشن نے مہمان مقرر کا تعارف کروایااور عنوان کے بارے میں تفصیلات بھی پیش کیں۔ اس موقع پر سرپرست آنند راج ورما، نائب صدر شی پی کے کیڈیا، جائنٹ سکریٹری شری وشواناتھ اگروال اور سوہن لال کیڈل بھی موجود تھے۔ جناب ابراہیم جیلانی یوگا ایکسپرٹ کے عملی مظاہرے پر نشست اختتام کو پہنچی۔ شری پی کے کیڈیا نائب صدر نے شکریہ پر نشست برخواست ہوئی۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close